The news is by your side.

Advertisement

خطرناک وبائیں دنیا کو اپنا نشانہ بنانے کے لیے تیار، کیا ہم اس کے لیے تیار ہیں؟

واشنگٹن: مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس نے خبردار کیا ہے کہ کرونا وائرس جیسی وبا اب ہر 20 سال بعد دنیا کو متاثر کرسکتی ہے چنانچہ دنیا کو اس کے لیے تیار رہنے کی ضرورت ہے۔

برطانوی اخبار فنانشل ٹائمز کو بذریعہ اسکائپ انٹرویو دیتے ہوئے بل گیٹس نے اس بات پر سخت تشویش کا اظہار کیا کہ اب تک دنیا کھربوں ڈالرز خرچ کر چکی ہے تاہم ابھی تک کرونا وائرس پر قابو نہیں پایا جاسکا، اور ایسا صرف اس لیے ہوا کیونکہ دنیا کا طبی نظام اس کے لیے تیار نہیں تھا۔

انہوں نے خبردار کیا کہ اب ایسی وبائیں ہر 20 سال بعد پھوٹ سکتی ہیں لہٰذا دنیا کو اس کے لیے تیار رہنے کی ضرورت ہوگی۔

بل گیٹس کا کہنا تھا کہ اگر دنیا اس طرح کی وباؤں سے نمٹنے کے لیے تیار ہوتی تو آج کھربوں ڈالرز خرچ نہ ہوتے اور بہت کم خرچ میں ہم اس پر قابو پاسکتے تھے۔ مستقبل میں حکومتوں کو اپنے طبی نظام کو جدید ترین اور فوری ردعمل دینے کی صلاحیت کی بنیاد پر تیار رکھنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ آج ہماری مدد کے لیے سائنس موجود ہے، اگر ہم پہلے سے تیار ہوتے تو بہت کم وقت میں اس پر قابو پاسکتے تھے۔ بل گیٹس نے امید ظاہر کی کہ دنیا موجودہ صورتحال سے سبق سیکھے گی اور آئندہ پہلے سے تیاری کر کے رکھے گی۔

خیال رہے کہ بل گیٹس نے سنہ 2015 میں خبردار کیا تھا کہ بہت جلد دنیا کو ایک خطرناک وبا اپنا نشانہ بنا سکتی ہے جو ایک سال کے اندر اندر 3 کروڑ افراد کو موت کے گھاٹ اتار دے گی۔

انہوں نے اسی وقت خبردار کردیا تھا کہ تمام تر ترقی کے باوجود دنیا کسی بھی قسم کی وبا سے نمٹنے کے لیے تیار نہیں ہے۔

بل گیٹس کی فاؤنڈیشن نے کرونا وائرس پر قابو پانے کے لیے اربوں ڈالرز عطیہ بھی کیے ہیں۔ ان کی عطیہ کردہ رقم کرونا وائرس کے خلاف تیار کی جانے والی ویکسینز کے لیے فیکٹریوں کی تعمیر پر خرچ کی جائے گی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں