The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں پرندوں کی مارکیٹس کیوں بند کردی گئیں؟

ریاض: مکہ مکرمہ میں پرندوں کی خرید و فروخت کے بازار بند کرنے کی ہدایت جاری کردی گئی، انتظامیہ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ انفلوائنزا کا شکار پرندوں سے نجات حاصل کی جائے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق میئر مکہ انجنیئر محمد عبداللہ القویحص نے بلدیہ کے زیر انتظام پرندوں کی مارکیٹوں اور یومیہ بنیاد پر لگنے والے پرندوں کے بازار کو عارضی طور پر بند کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

میئر مکہ کی جانب سے ریجنل بلدیاتی اداروں کو احکامات جاری کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ احتیاط کے پیش نظر مکہ میں پرندوں کی راویتی مارکیٹوں کو عارضی طور پر بند کر دیا جائے۔

میئر کی جانب سے ہدایت کی گئی ہے کہ احتیاط کے طور پر پرندوں کے جمع ہونے والے مقامات پر بھی جراثیم کش ادویات کا اسپرے کیا جائے۔

ہدایت میں کہا گیا کہ ایسے پرندے جن کے بارے میں شبہ ہو کہ وہ انفلوائنزا کا شکار ہیں ان سے نجات حاصل کی جائے، بلدیہ کی ٹیمیں جامع حکمت عملی کے تحت کام کریں جبکہ تمام اقسام کے پرندوں کی خرید و فروخت کو عارضی طور پر روک دیا جائے۔

میئر نے وزارت پانی و ماحولیات اور زراعت کے تعاون سے جامع حکمت عملی مرتب کر کے اس پر فوری عمل کرنے کی ہدایت کی ہے۔

ادھر فیملی میڈیسن کے ماہر ڈاکٹر احمد عبدالملک نے پالتو جانوروں کے حوالے سے کہا ہے کہ گھریلو جانوروں سے خوف زدہ ہونے کی ضرورت نہیں، گھروں میں رہنے والے جانوروں سے کرونا وائرس پھیلنے کا اندیشہ نہیں تاہم اس ضمن میں احتیاط برتنے کی ضرورت ہے۔

ان کے مطابق گھریلو جانوروں کو عام جانوروں کے ساتھ باہر نہ رکھا جائے تاکہ وہ کسی قسم کے جراثیم سے متاثر نہ ہوں، پالتو جانوروں سے کھیلنے اور ان کے کام کرنے کے بعد ہاتھوں کو 20 سیکنڈ تک جراثیم کش محلول سے دھویا جائے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب میں اب تک کرونا وائرس کے 21 مریض سامنے آچکے ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں