ہفتہ, جون 22, 2024
اشتہار

بشکیک میں طلبا پر تشدد: کرغزستان میں پاکستانی سفیر کا اہم ویڈیو پیغام جاری

اشتہار

حیرت انگیز

بشکیک میں پاکستانی طالب علموں پر تشدد کے واقعات اور موجودہ صورتحال پر کرغزستان میں تعینات سفیر نے اہم ویڈیو پیغام جاری کر دیا۔

پاکستانی سفیر حسن علی ضیغم نے اپنے ویڈیو پیغام میں کہا کہ بشکیک میں انتہا پسندوں نے غیر ملکی ہوسٹلز پر حملہ کیا جس کے نتیجے میں کم از کم 14 پاکستانی طلبا زخمی ہوئے جبکہ ایک طالب علم شاہ زیب اسپتال میں زیرِ علاج ہے۔

حسن علی ضیغم نے بتایا کہ کرغزستان سے متعلق سوشل میڈیا پر آنے والی خبریں بے بنیاد ہیں، حملوں میں ملوث 4 افراد کو گرفتار کیا جا چکا ہے، وزیر اعظم شہباز شریف اور نائب وزیر اعظم اسحاق ڈار نے پاکستانی طلبا کی ہر ممکن مدد کی ہدایت کی ہے۔

- Advertisement -

کرغزستان کے دارالحکومت بشکیک میں آج پاکستانی طلبا کے ہاسٹلز پر حملے ہوئے۔ پاکستان طلبا نے بتایا تھا کہ پاکستانی ہاسٹلز پر حملے میں متعدد طلبا زخمی ہوئے، بلوائی بہت بڑی تعداد میں تھے جنہوں نے ہاسٹلز میں توڑ پھوڑ کی۔

طلبا کا کہنا تھا کہ کل عرب ممالک کے طلبہ سے مقامی لوگوں کا جھگڑا ہوا تھا تاہم حملوں کے بعد کرغزستان کی فوج ہوسٹلز کے باہر پہنچنا شروع ہوگئی۔

بعدازاں سفیر حسن علی ضیغم نے سوشل میڈیا پر پیغام میں ہدایت کی تھی کہ حالات معمول پر آنے تک بشکیک میں موجود پاکستانی طلبا گھروں کے اندر ہی رہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ مقامی قانون نافذ کرنے والے اداروں سے رابطے میں ہیں اور طلبا کی حفاظت یقینی بنانے کیلیے اقدامات کر رہے ہیں۔

ادھر، وزیر اعظم شہباز شریف نے پاکستانی طلبا کی صورتحال پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے تمام تر ضروری مدد اور تعاون فراہمی کی ہدایت کی تھی۔

شہباز شریف نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ بشکیک میں پاکستانی طلبا کی صورتحال پر گہری تشویش ہے، سفیر کو تمام ترضروری مدد اور تعاون فراہمی کی ہدایت کی۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم آفس پاکستانی سفارت خانے سے رابطے میں ہے اور صورتحال پر مسلسل نظر رکھے ہوئے ہیں۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں