افغانستان میں خود کش بم دھماکا، 68 افراد ہلاک مزید ہلاکتوں کا خدشہ
The news is by your side.

Advertisement

افغانستان میں خود کش حملہ، 68 افراد ہلاک مزید ہلاکتوں کا خدشہ

کابل: افغانستان کے صوبے ننگر ہار میں خود کش دھماکے کے نتیجے میں اب تک ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد68 تک پہنچ چکی ہے جبکہ سرکاری حکام نے مزید ہلاکتوں کا خدشہ بھی ظاہر کردیا۔

افغان میڈیا کے مطابق ننگر صوبے کے علاقے مہمند درہ میں گزشتہ روز پولیس چیف کو تبدیل کرنے کے لیے مقامی افراد کا احتجاج جاری تھا کہ اسی دوران ایک زور دار دھماکا ہوا۔

صوبائی گورنر کے ترجمان کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ خود کش حملہ آور نے مظاہرین کو نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں اب تک 68 افراد ہلاک اور  165 کے قریب زخمی ہیں۔

دہشت گردی کی کارروائی کے بعد پولیس نے جائے وقوعہ سے شواہد اکھٹے کیے جبکہ ہلاک شدگان اور زخمیوں کو اسپتال منتقل کر دیا تھا، ابتدائی تفتیش کے مطابق حملہ آور نے ہجوم میں گھس کر خود کو دھماکا خیز مواد سے اڑایا تھا۔


مزید پڑھیں: افغانستان: طالبان کے متعدد دہشت گرد حملے، 56 افراد ہلاک


افغان محکمہ صحت کے ڈائریکٹر نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ہلاکتوں میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے کیونکہ کئی زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے جنہیں انتہائی نگہداشست وارڈ میں رکھا گیا ہے۔

قبل ازیں طالبان نے متعدد افغانستان کے مختلف علاقوں میں دہشت گرد حملے کیے جس کے نتیجے 56 افراد ہلاک ہوئے، عسکریت پسندوں نے مختلف علاقوں پر اپنا قبضہ بھی جمایا۔ افغان میڈیا کے مطابق طالبان نے قندوز، جوزجان اور سرے پل کے علاقوں میں حملے کیے جس میں فوجی چھاؤنیوں کو نشانہ بنایا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں