The news is by your side.

Advertisement

بوئنگ طیاروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان، منافع میں کمی

واشنگٹن: امریکی طیارہ ساز کمپنی کے بوئنگ 737 میکس طیاروں کی کارکردگی پر دنیا بھر میں سوالات اٹھنے لگے، منافعے میں بھی واضح کمی واقع ہوئی۔

تفصیلات کے مطابق ناقص کارکردگی اور حادثات کے بعد بوئنگ 737 میکس طیاروں پر دنیا بھر میں شدید تشویش پائی جاتی ہے، جبکہ رواں برس کی پہلی سہ ماہی میں اس کے منافع میں کمی واقع ہوئی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ منافع میں کمی کی وجہ بھی بوئنگ سیون تھری سیون میکس طیاروں کے حادثات اور عالمی سطح پر اس طرز کے طیاروں کے استعمال پر پابندی بنی ہے۔

اعداد وشمار کے مطابق رواں برس کی پہلی سہ ماہی میں بوئنگ کو دو اعشاریہ ایک ارب ڈالر کا منافع ہوا، جو گزشتہ برس کے اسی عرصے کے مقابلے میں تیرہ اعشاریہ دو فیصد کم ہے۔

یاد رہے کہ رواں ماہ کے آغاز میں ایتھوپین ائیرلائن کا بوئنگ طیارہ تباہ ہوا جس کے نتیجے میں 157 افراد ہلاک ہوئے تھے، اسی طرح اکتوبر 2018 میں بھی اسی ماڈل کا طیارہ کریشن ہوا تھا جس کے نتیجے میں 189 مسافر مارے گئے تھے۔

بعد ازاں متحدہ عرب امارات، برطانیہ، فرانس، چین، سنگاپور اور انڈونیشیا بوئنگ737 ماڈل کے تمام طیاروں کی فضائی حدود میں داخلے پر پابندی عائد کی، جبکہ کئی یورپی ممالک نے کہا تھا کہ وہ مذکورہ پابندی پر غور کررہے ہیں۔

ایک اور بوئنگ 737 طیارہ حادثے کا شکار ہونے سے بال بال بچ گیا

اتنے بڑے حادث کے بعد گذشتہ ماہ ایک بار پھر بوئنگ طیارہ حادثے سے بال بال بچا تھا، امریکی ریاست فلوریڈا میں بوئنگ طیارے نے جیسے ہی اڑان بھری فوراً انجن میں خرابی محسوس ہوئی جس کے بعد پائلٹ نے ایمرجنسی لینڈنگ کی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں