The news is by your side.

Advertisement

برطانیہ 31 جنوری 2020 کو پورپی یونین سے علیحدہ ہوجائے گا

لندن: برطانوی ممبران پارلیمنٹ نے بریگزٹ ڈیل پر وزیراعظم بورس جانسن کے حق کے میں فیصلہ سنا دیا، جس کے بعد اگلے سال 31 جنوری 2020 کو برطانیہ یورپی یونین سے علیحدہ ہوجائے گا۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی الیکشن میں کامیابی کے بعد نئی پارلیمنٹ میں وزیراعظم بورس جانسن کی پہلی کامیابی بریگزٹ بل کے حوالے سے کی جانے والی ووٹنگ کی صورت میں سامنے آئی ہے، بورس جانسن کی حمایت میں 358 اور مخالفت میں 234 ووٹ ڈالے گئے۔

نئی پارلیمنٹ میں آج ہونے والی ووٹنگ نے بورس جانسن کے انتخابات کرانے کے فیصلے کو درست ثابت کر دیا۔ برطانوی وزیراعظم کی اس کامیابی کے بعد برطانیہ کی یورپی یونین سے علیحدگی کی راہ میں حائل رکاوٹیں دور ہوگئیں۔ برطانیہ اب اگلے سال 31 جنوری 2020 کو یورپی یونین سے علیحدہ ہو جائے گا۔

بریگزٹ بل کے حوالے سے کی جانے والی ووٹنگ میں کامیابی کے بعد وزیراعظم بورس جانسن نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ اپنے ملک کو دوبارہ متحد کریں۔

اس سے قبل بورس جانسن نے برطانوی ممبران پارلیمنٹ سے درخواست کی تھی کہ وہ بریگزٹ بل کے حوالے اکٹھے ہوجائیں اور ان کی حمایت کریں۔

دوسری جانب اپوزیشن لیڈر جیرمی کوربن نے کہا کہ بریگزٹ کے بعد امریکہ کے ساتھ تجارتی معاہدے کو یقینی بنانے کے لیے برطانیہ کو کھانے کے معیاروں میں کمی کرنا ہوگی۔

برطانیہ میں پارلیمانی انتخابات، کنزرویٹو پارٹی نے میدان مار لیا

یاد رہے کہ 13 دسمبر کو برطانیہ کے پارلیمانی انتخابات میں کنزرویٹو پارٹی نے واضح اکثریت کے ساتھ میدان مارا تھا، جب کہ اپوزیشن لیڈر جیرمی کوربن نے اپنی شکست تسلیم کرتے ہوئے نتائج کو پارٹی کے لیے مایوس کن قرار دیا تھا۔

کنزرویٹو پارٹی 650 میں سے 365 نشستوں کے ساتھ پہلے نمبر پر رہی جب کہ لیبر پارٹی 203 نشستوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں