The news is by your side.

Advertisement

ماں بیٹے پرمشتمل پاکستان کی منفرد بائیک رائیڈرٹیم

ذرا نم ہو تو یہ مٹی بہت زرخیز ہے ساقی ہے، لاہور سے تعلق رکھنے والے ماں بیٹا موٹرسائیکل پرگھوم کر پاکستان کی خوبصورتی دنیا تک پہنچا رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق لاہور سے تعلق رکھنے والے قدیر گیلانی ایک پیشہ وربائیک رائیڈر ہیں اور جو بات انہیں دنیا بھر کے تمام رائیڈر ز سے منفر د بناتی ہے ، وہ یہ کہ اس سفر میں ان کی والدہ بھی شریک ہوتی ہیں۔

قدیر گیلانی کی والدہ کی عمر بہتر سال ہے لیکن اس عمر میں بھی وہ دور دراز علاقوں کا سفر بخوشی کرتی ہیں اور اپنے بیٹے کی حوصلہ افزائی کرتی ہیں۔

قدیر گیلانی اس لئے خوش قسمت نہیں کہ وہ پاکستان کے خوبصورت مقامات کی سیر کرتے ہیں، اس لئے بھی نہیں کہ وہ یہ سفر بائیک پر کرتے ہیں بلکہ اگر خوش قسمت ہیں تو اس لئے کہ اس سارے سفر میں ان کی بہادر اور با ہمت ’ماں ساتھ ہوتی ہیں۔

یکم مئی سے ترااپنی ماں کے ساتھ 4،872 کلومیٹر کے طویل سفر پر روانہ ہورہے ہیں ۔ اس سفر میں قدیر گلگت، کشمیر، سکردو اور چلاس کے علاوہ وزیرستان بھی شامل ہےیہ ایک منفرد اور حیرت انگیز بائیکرز ٹیم ہےجس کی حوصلہ افزائی کی جانی چاہیے ، بلکہ وہ جن علاقوں میں جائیں وہاں کے مقامی لوگ انہیں اسی طرح خوش آمدید کہا جائے جیسا کہ حال ہی میں ایوا زوبیک یا ڈریو بینسکی کو کہا گیا ہے۔

یاد رہے کہ یہ ماں بیٹے پوری دنیا میں پاکستان کے سیاحتی علاقوں کی ایک ایسی تصویر پیش کررہے ہیں جس کا تصور بھی ممکن نہیں ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں