The news is by your side.

برطانیہ کو یورپی یونین سے اخراج کے لیے ایک سال کی مہلت دینے کی تجویز

برسلز: یورپی کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹسک نے برطانیہ کو یورپی یونین سے اخراج کے لیے ایک سال کی مہلت دینے کی تجویز دی ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق یورپی یونین کے ایک سینئر اہلکار نے کہا ہے کہ اگر برطانوی پارلیمان اس مدت سے قبل یورپی یونین چھوڑنے کی منظوری دے تو برطانیہ ایسا کرسکے گا، تجویز آئندہ ہفتے یورپی یونین کے سربراہ اجلاس میں پیش کی جائے گی۔

برطانوی وزیراعظم تھریسامے لیبر پارٹی سے بریگزٹ معاملے پر اتفاق رائے کے لیے کوشاں ہیں، حکومت اور حزب اختلاف کے درمیان مذاکرات جاری رہیں گے جس میں بریگزٹ معاہدے پر تصدیقی ریفرنڈم بھی زیر بحث آئے گا۔

برطانوی اراکین پارلیمنٹ نے بدھ کے روز صرف ایک ووٹ کی برتری سے منظور ہونے والی قرارداد کے نتیجے میں وزیراعظم تھریسامے کو مجبور کردیا ہے کہ وہ بریگزٹ کی تاریخ میں توسیع کے لیے یورپی یونین سے رجوع کریں تاکہ ڈیل کے بغیر یورپی یونین سے علیحدگی سے بچا جاسکے۔

مزید پڑھیں: برطانوی پارلیمنٹ میں نوڈیل بریگزٹ کو مسترد کرنے کا بل منظور

واضح رہے کہ برطانوی چانسلر فلپ ہیمنڈ نے کہا تھا کہ وہ امید رکھتے ہیں کہ برسلز ایک طویل توسیع پر زور دے گا، ان کا کہنا تھا کہ حتمی معاہدے پر عوامی رائے دہی مکمل طور پر قابل اعتماد راستہ ہوگا۔

برطانیہ کے پاس یورپی یونین کو بریگزٹ کا لائحہ عمل تجویز کرنے کے لیے 12 اپریل تک کا وقت ہے، منصوبہ قبول نہ ہونے کی صورت میں برطانیہ کسی معاہدے کے بغیر یورپی یونین سے نکل جائے گا۔

بریگزٹ ڈیل نہ ہونے کے باعث ملک میں سیاست کے علاوہ معاشی بحران کی صورت حال پیدا ہورہی ہے، امریکی ڈالر اور یورو کے مقابلے میں برطانوی پاؤنڈ کی قدر میں صفر عشاریہ تین فیصد کمی نوٹ کی گئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں