The news is by your side.

Advertisement

جرمن چانسلر نے امریکا ایران تنازعے کا سیاسی حل ممکن قرار دے دیا

برسلز: جرمن چانسلر انجیلا مرکل نے امریکا اور ایران کے درمیان جاری کشیدگی کے خاتمے کے لیے سیاسی حل ممکن قرار دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکا اور ایران کے درمیان جاری کشیدگی کے اثرات عالمی منظر نامے پر بھی پڑرہے ہیں، جبکہ عالمی رہنماؤں نے معاملے کے حل پر زور دیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق یورپی یونین کے سربراہی اجلاس کے حاشیے میں یورپی ممالک کی حکومتوں کے پالیسی مشیران کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے جرمن جانسلر نے ایران اور امریکا کو مذاکرات کی میز پر آنے کے لیے دباؤ ڈالا۔

انجیلا مرکل کا کہنا تھا تھا کہ فطری بات ہے کہ سبھی کی طرح وہ بھی پریشان ہیں اور سفارتی مذاکراتی عمل ہی میں اس بحرانی صورت حال کا حل پوشیدہ ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ روز امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے انکشاف کیا تھا کہ امریکی ڈرون گرائے جانے کے بعد ٹرمپ نے ایران پر حملے کا حکم دیا تھا لیکن حملے کا فیصلہ اچانک واپس لے لیا۔

امریکی اخبار کا کہنا تھا امریکی طیارے فضاؤں میں آگئےتھے اور بحری جہازوں نے پوزیشن لےلی تھی تاہم آپریشن کے آغاز سے چندگھنٹے قبل ہی صدرٹرمپ نے حملے کا فیصلہ اچانک واپس لے لیا۔

ایران پر حملے کے لیے تیار تھے، تین اطراف سے اسٹرائیک کرنا تھی، ٹرمپ کا اعتراف

اس سے قبل ایران کی جانب سے امریکی ڈرون گرائے جانے پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ردعمل دیتے ہوئے کہا تھا کہ ایران نے امریکی ڈرون گرا کر بہت بڑی غلطی کی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں