The news is by your side.

Advertisement

برطانوی فوج میں تاریخی کمی ‏

جدیدیت کے دور میں جنگوں کے نئے محاذ اور جہت کو مدنظر رکھتے ہوئے برطانیہ نے اپنی فوج ‏کی تعداد میں بڑی کمی کا منصوبہ تیار کیا ہے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق برطانیہ نے فوجی اہلکاروں پر انحصار کم کرتے ہوئے مستبقل ‏کے تقاضوں اور چیلنجز سے نمٹنے کے لیے ڈرونز اور سائبر وار میں اپنی استعداد بڑھانے کی ‏پالیسی اختیار کی ہے۔

نئی دفاعی پالیسی کے تحت فوج کی تعداد میں 10 ہزار تک کمی کر کے اسے 72 ہزار 500 تک لایا ‏جائے گا جو کہ 3 سو سالہ برطانوی تاریخ میں فوج کی سب سے زیادہ کٹوتی ہے۔

Full-time army personnel has fallen steadily over the past decade

آئندہ پانچ برسوں میں 2025 تک اہلکاروں کی کٹوتی کرکے ان کی جگہ روبورٹس اور دیگر جدید ‏ٹیکنالوجی سے تیار کردہ ڈیوائسز لے لیں گی۔

مسلح افواج کے ایک بڑے پیمانے پر نظر ثانی کا اعلان کرتے ہوئے وزیر دفاع مسٹر والیس نے کہا ‏کہ اس نے معلومات کی تیزی سے بڑے پیمانے تک پھیلاؤ اور ملک کی سلامتی کو درپیش نئے ‏خطرات کو “تلاش کرنے اور سمجھنے” کے قابل ہونے کے لیے نئی جہتوں تک پہنچنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ حکومت اگلے چار سالوں میں برطانیہ کے دفاعی اخراجات میں £ 24 بلین کا ‏اضافہ کر رہی ہے جب کہ حکومت الیکٹرانک وارفیئر اور ڈرون جیسی نئی صلاحیتوں کے منصوبے ‏مرتب کر رہے ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں