The news is by your side.

Advertisement

پاک نیوزی لینڈ سیریز پر کوئی انٹیلیجنس رپورٹ شیئر نہیں کی: برطانوی ہائی کمیشن

اسلام آباد: برطانوی ہائی کمیشن نے ایک بیان جاری کیا ہے کہ پاک نیوزی لینڈ سیریز پر ان کی جانب سے کوئی انٹیلیجنس رپورٹ شیئر نہیں کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق پاک نیوزی لینڈ کرکٹ سیریز کی اچانک منسوخی کے بعد دونوں ممالک کے درمیان صورت حال عجیب ہو گئی، یہاں تک کے اعلیٰ سطح پر رابطے بھی کیے گئے جب وزیر اعظم عمران خان نے وزیر اعظم نیوزی لینڈ سے فون پر اس سلسلے میں بات کی۔

ادھر یہ افواہ بھی پھیلی کہ برطانوی ہائی کمیشن کی جانب سے نیوزی لینڈ کے ساتھ کوئی انٹیلیجنس رپورٹ شیئر کی گئی تھی جس پر حکومت نیوزی لینڈ نے سیریز کی فوری منسوخی کا فیصلہ کیا، تاہم برطانوی ہائی کمیشن کی جانب سے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس طرح کی خبروں کی ہم سختی سے تردید کرتے ہیں، ہائی کمیشن نے کوئی انٹیلیجنس رپورٹ شیئر نہیں کی۔

پاک نیوزی لینڈ سیریز : عمران خان کا نیوزی لینڈ کی وزیراعظم سے رابطہ

واضح رہے کہ وزیر اعظم عمران خان سے رابطے میں نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن نے احتیاطی طور پر نیوزی لینڈ ٹیم کا دورہ ملتوی کرنے کی استدعا کی تھی۔

اس رابطے کے بعد جیسنڈا آرڈرن نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ نیوزی لینڈ ٹیم کی سیکیورٹی ان کی اوّلین ترجیح ہے، وزیر اعظم عمران خان سے بات ہوئی ہے، عمران خان کا نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کا خیال رکھنے پر شکریہ ادا کیا۔

انھوں نے کہا مجھے اندازہ ہے کہ کھیل کو اس طرح ختم کرنا شائقین کے لیے کتنا مایوس کن ہے، لیکن نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ کے فیصلے کی حمایت کرتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں