The news is by your side.

Advertisement

‘برطانوی وزیراعظم سے عام مریضوں جیسا سلوک کیا گیا’

لندن: وزیراعظم بورس جانسن کو کوئی خصوصی سہولیات نہیں دی گئیں ان کے ساتھ دیگر مریضوں جیسا سلوک کیا گیا۔

سینٹ تھامسز اسپتال میں بورس جانسن کے ہمراہ ڈیوٹی پر مامور نرس جینی میگی نے کہا ہے وزیراعظم کو آئی سی یو میں رکھنا ضروری تھا تاہم ان کے ساتھ کوئی خصوصی برتاؤ نہیں رکھا گیا بلکہ انہیں دیگر مریضوں کی طرح ہی سہولیات مہیا کی گئیں۔

بورس جانسن نے صحتیابی کا بعد نرس جینی میگی کا شکریہ ادا کیا تھا جس پر کچھ حلقوں کی طرف سے یہ سوال کیا گیا کہ بورس جانسن کے ساتھ وی آئی پی سلوک کیا گیا تھا۔

برطانوی وزیراعظم نے اسپتال سےڈسچارج ہونےکےبعد اپنے پہلے پیغام میں کہا تھا کہ جان بچانے پر این ایچ ایس کا مقروض ہوں، این ایچ ایس سےاظہارتشکر کیلئے الفاظ تلاش کرنا مشکل ہے۔

بورس جانسن کا کہنا تھا کہ لاکھوں برطانوی افرادکی گھرمیں رہنےکی کوششیں قابل قدرہیں، ماضی کی طرح اس باربھی چیلنج پرقابوپالیں گے۔

دوسری جانب برطانیہ کے چار شہروں میں ویکسین کے ٹرائل شروع کر دئیے گئے ہیں تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ ویکسین اس سال کے آخر تک عوام کیلئے میسر ہو سکے گی۔ ریسرچ کے انچارج کا کہنا ہے کہ ویکسین کی کامیابی کے اسی فیصد امکانات ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں