The news is by your side.

Advertisement

چڑیا گھرمیں پیتل کے شیرلوٹ آئے

کراچی: شہرِ قائد کے چڑیا گھر سے کئی سال قبل غائب ہوئے پیتل کے شیر ایک بار پھر اپنی جگہ پر واپس آگئے ہیں، ان کی بحالی کا کام جاری ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی زو کی ملکیت پیتل کے شیروں کی یہ جوڑی میٹروپولیٹن کمشنر سیف الرحمن نے مہوتا پیلس سے واپس لے کر چڑیا گھر کے حوالے کی ہے۔

پیتل کے شیروں کی یہ جوڑی ملکہ برطانیہ نے کراچی زو کو تحفے میں دی تھی اور اس کی خاص بات یہ ہے کہ ایسی جوڑیاں دنیا میں صرف دو ہیں، ایک کراچی زو کی ملکیت ہے جبکہ دوسری لندن میں موجود ہے۔

آج سے چودہ سال قبل مہوتا پیلس کی انتظامیہ نے برطانوی دور کے حوالے سے منعقدہ ایک نمائش کے لیے یہ جوڑی مستعار لی تھی۔ کے ایم سی اور کراچی زو کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ یہ شیر محض 15 دن کے لیے دیئے گئے تھے ، تاہم مہوتا پیلس کا دعویٰ ہے کہ یہ شیر غیر معینہ مدت تک کے لیے مہوتا پیلس منتقل کیے گئے تھے۔

مہوتا پیلس نے یہ بھی دعویٰ کیا تھا کہ شیر وہاں منتقل کرنے سے انہیں نقصان نہیں ہوا بلکہ پیلس انتظامیہ نے انہیں محفوظ کیا ہے ، حقیقت یہ ہے کہ مہوتا پیلس میں قیام کےد وران یہ شیر چمکتے سنہری رنگ کے بجائے سیاہ رنگ میں تبدیل کردیے گئے تھے ۔

میٹروپولیٹن کمشنر سیف الرحمن نے اپنی نگرانی میں شیروں کے ان مجسموں کو ان کی قدیمی جگہ نصب کروایا ہے اور اب ان کی اصل اور قدیمی حالت میں بحالی کا کام جاری ہے، انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ بلدیہ عظمیٰ کراچی ، شہر کے تمام تر تاریخی ورثے کو بحال کررہی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ پیتل کے شیروں کی یہ جوڑی کراچی کے بچوں کی امانت تھی جو کہ اب انہیں واپس کردی گئی ہے ، یاد رہے کہ بچے شیروں کی اس جوڑی کو ہمیشہ سے پسند کرتے آئے ہیں اور ماضی میں چڑیا گھر جانےوا لے ہر شخص کی یادوں میں شیروں کی یہ جوڑی محفوظ تھی۔

ماضی میں ان شیروں سے محظوظ ہونے والے بچے جو اب بڑے ہوچکے ہیں ، وہ جب اپنے بچوں کو چڑیا گھر لے کر جاتے تھے تو پیتل کے شیر پر سوار ہونے کے اپنے بچپن کے اس سنسنی خیز تجربے کو یاد کیا کرتے تھے ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں