site
stats
اردو بلاگز

بادشاہی تو صرف الله کی ہے

کچھ دن قبل ہمارے قابل احترام وزارت پانی و بجلی، جسے وزارت لوڈشیڈنگ کہاجاۓتوزیادە بہتر ہے کے وزیر جناب خواجہ آصف کا بیان گوش گزار ہوا “ہم بے بس ہیعوامبارش کیلۓ دعاکریں پاکستان میں سب کچھ الله ہی چلارہا ہے۔

یہ بیان پڑھ کر تھوڑی خوشی بھی ہوئی اور تھوڑی حیرت بھی۔ خوشی اسلۓ کہ ہمارے اہل اقتدار میں سے کوئی تو مانا کہ یہ سب کچھ الله چلارہا ہےاور حیرت اس پر ہوئی کہ کچھ ماە پہلے تو آپ فرمارہے تھےکہ اگر وزارت پانی وبجلی ملی تو ایک ماہ میں سرپرائزدوں گا۔”

تو اتنے جلدی آپکی سوچ کیسے بدل گئی جناب؟ کیا روزے میں شدیدگرمی میں لوڈ شیڈنگ کے مارے بے بس غریب پاکستانیوں کی بددعائیں تو نہیں سن لی اور یقینا سنتے بھی ہوں گے اور ندامت بھی تو ہوتی ہوگی روزانہ رات کو وزارت اور اقتدار کو لات مارنے کا فیصلہ بھی کرتے ہوں گے مگر صبح پھرائیرکنڈشنڈ جھنڈے والی کار، ہاتھ میں اختیارات اور لاتعداد ماتحت آپ کو اپنا فیصلہ بدلنے پر مجبور کردیتے ہوں گے۔

کیا لوڈشیڈنگ اورکیاغریب پاکستانیوں کے روزے! آخرپاکستانیوں کی کیا حیثیت یہ تو پچھلے 67 سالوں میں ظلم کی چکی میں پس رہے ہیں۔

:آقا کریم صلی الله علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا

“مومن ایک سوراخ سے دو دفعہ نہیں ڈسا جاتا”

ہم اس قدر احمق ہیں کہ کئ دفعہ انہی لوگوں سے ڈسے جاچکے ہیں مگر پھر انہی کو منتخب کرتے ہیں۔

:میرے آقا، سرکار دو عالم، محبوب خدا صلی الله علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا

“مسلمان کبھی دھوکا نہیں دے سکتا اور جھوٹ نہیں بول سکتا”

مگر صد افسوس ہمارے ہاں دھوکے اور جھوٹ کا بازار پورے ملک میں گرم ہے۔ کوئی غریب ہو یا امیر دھوکا دینا، جھوٹ بولنا اسکا معمول بن چکا ہے۔ اسکے باوجود ہم کسی کو خود سے بہتر سمجھنے کیلۓ تیار ہی نہیں ہیں۔

میں اہل اقتدار سے کہنا چاہتا ہوں خدارا اس قوم پر احسان کیجیے اور سچ بتائیے آپ آئی ایم ایف سے اسقدر قرضہ لے چکے ہیں کہ انکی مرضی کے بنا آپ ایک میگاواٹ کا پروجیکٹ نہیں لگا سکتے اور آپ کو پیسوں کی قسط اس وقت ملتی ہے جب آپ کی شرائط کے مطابق بجلی مہنگی نہیں کردیتے اور جب تک آپ ان کا سارا قرض سود سمیت واپس نہیں کردیتے نا آپ بجلی کی قیمت کم کر سکتےاور نا کوئی بجلی گھر لگا سکتے ہیں کیونکہ ان کے ساتھ آپ پہلے ہی اگلے کئی سال کی منصوبہ بندی کرچکے ہیں اور اب آپکو وہی سب کچھ کرنا ہے جو وہ چائیں گے۔

پاکستانی تو اتنا بھی نہی جانتے اس قرض پر لگنے والا سود انکی جیب سے بلوں کی صورت ہر ماہ ادا کیا جاتا ہے۔ کیا آپ نے کبھی سوچا یہ سود کا پیسہ آپکو کہاں تک لے جاۓ گا؟ آپ نے اور آپ سے پہلے آنے والوں نے اس قوم کو سود خور بنادیا۔ الله اور اسکے رسول صلی الله علیہ وآلہ وسلم کے خلاف اعلان جنگ کرنے والوں کی زندگیوں میں تو بس ذلت اور رسوائی ہی ہے۔

اتنے بلندبانگ دعووں کے بعد اب آپ نےبجلی کے معاملےمیں تو بے بسی ظاہر کردی لہذا قوم کو تیار رہنا چاہیے کیونکہ آپ کے پاس ایک اور وزات کا چارج بھی ہے۔ ایسا نہ ہو وقت آنے پر آپ وہاں بھی بے بسی ظاہر کردیں۔ الله پاک رحم فرمائیں۔

بے شک کائنات کی ہر شے الله تعالی کے حکم سے چل رہی ہے۔ پاکستان تو الله تعالی کے اس احسان کا نام ہے جس پر ہم نے بے انتہا وار کئے منافقت ہم نے کی، دھوکا ہم نے دیا مگر یہ الله تعالی کا وہ معجزہ ہے جسے ہمیشہ قائم رہنا ہے۔ إنشاٴالله

جناب عالی نہایت ادب سے آپ سے عرض ہےاس قوم پر احسان کیجیے، یہ اقتدار کے مزے عارضی ہیں آپ سے پہلے بھی بہت سے لوگ آۓ جن کی قسمت میں اب محض بددعائیں اور ذلت ہے۔ آپ کو الله نے اختیار دیا ہے۔ آپ کے پاس وقت ہے مجھے بہت خوشی ہوئی آپ نے فرمایا یہاں سب کچھ الله ہی چلارہا ہے۔ بے شک یہ کائنات بھی الله کی ہے، بادشاہی بھی الله کی ہے، اقتدار بھی الله کا ہےاور ہم بھی الله کے ہیں۔ ہمارے پاس تو بس مہلت کے چند دن ہیں آپ اگر بے بس ہیں تو چھوڑ دیجیے کسی اہل شخص کو آنے دیں اور خود کو آزاد کرلیجیے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top