The news is by your side.

Advertisement

بزنس کمیونٹی کو آرڈیننس کے ذریعے نیب سے الگ کردیا، وزیراعظم

کراچی : وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ بزنس کمیونٹی کو نیب کا خوف تھا، بزنس کمیونٹی کو آرڈیننس کے ذریعے نیب سے الگ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مدینہ کی ریاست 2 اصولوں پر کھڑی تھی، ریاست مدینہ میں سب کے لیے ایک ہی قانون تھا۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کو ترقی میں سب سے آگے لے جانا چاہتے ہیں، ملک میں انصاف سب کے لیے برابر ہونا چاہئے، انسانیت اور انصاف ریاست مدینہ کی بنیاد ہے، ریاست نے کمزور طبقے کی ذمہ داری لینی ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بزنس کمیونٹی کے لیے آسانیاں ہوں گی، روزگار کے مواقع بڑھیں گے، ایک سال میں بہت سی کامیابیاں حاصل کی ہیں، بزنس کمیونٹی کو نیب کا خوف تھا، بزنس کمیونٹی کو آرڈیننس کے ذریعے نیب سے الگ کر دیا، نیب کو صرف پبلک آفس رکھنے والوں پر نظر رکھنی چاہیے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کو 2018 میں 30 ہزار ارب کا قرضہ ملا تھا، یہ بھی معلوم ہے کہ ہمیں ادارے کس حال میں ملے تھے، 2023 تک بھولنے نہیں دوں گا کہ ہمیں کس طرح کا پاکستان ملا تھا، ہمیں سوئیڈن کی معیشت تو نہیں ملی تھی۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کی کارکردگی کو آپ کے سامنے رکھوں گا، ہماری معاشی ٹیم بر وقت بزنس کمیونٹی کے لیے میسر ہوگی، 2019 معاشی استحکام اور 2020 ترقی کا سال ہوگا۔

وزیراعظم پاکستان نے کہا کہ پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ نوکریوں کا ہے، ماضی کی ناقص پالیسیوں سے معیشت کو بہت نقصان ہوا، سیاحت کے شعبے میں بہتری لا کر نوجوانوں کے لیے نوکریوں کے مواقع ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں