صدراور دو گورنرز کی نشستوں پر ضمنی الیکشن آج ہوگا، تمام تیاریاں مکمل -
The news is by your side.

Advertisement

صدراور دو گورنرز کی نشستوں پر ضمنی الیکشن آج ہوگا، تمام تیاریاں مکمل

کراچی/ پشاور : صدرمملکت، گورنر سندھ اور خیبر پختونخوا کے گورنر کی چھوڑی نشستوں پر ضمنی الیکشن کا میدان آج سجے گا۔ این اے247اور پی ایس111کراچی میں پی ٹی آئی کا مقابلہ ایک کیو ایم سے ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق شہر قائد کی دو نشستوں پر ضمنی انتخاب کا معرکہ آج ہوگا ، دونوں حلقوں میں تحریک انصاف، ایم کیوایم اور پیپلزپارٹی میں کانٹے کا مقابلہ متوقع ہے، انتخابی سامان کی ترسیل کا کام مکمل کرلیا گیا۔

 قانون نافذ کرنے والے اداروں نے سیکیورٹی پلان فائنل کرلیا، حساس پولنگ اسٹیشنز پر سی سی ٹی وی کیمرے نصب کیے جائیں اور کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کیلئے چار ہزار پولیس اہلکار اپنے فرائض انجام دیں گے۔

اس کے علاوہ پشاور کے حلقہ پی کے71میں بھی ضمنی انتخاب کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں، کراچی میں صدرمملکت عارف علوی اورگورنرعمران اسماعیل کی چھوڑی نشستوں پرضمنی الیکشن کا دنگل آج ہوگا، این اے247 اور سندھ اسمبلی کے حلقے پی ایس111میں پولنگ ہوگی۔

قومی اسمبلی کی نشست این اے247 پر آفتاب حسین صدیقی کپتان کے کھلاڑی ہیں، پیپلزپارٹی نے معروف اداکار قیصر نظامانی کو میدان میں اتارا ہے جبکہ صادق افتخارایم کیوایم کے امیدوار ہیں۔ پی ایس پی بھی قسمت آزمائے گی، ڈپٹی مئیر کراچی ارشد وہرہ مصطفی کمال کے امیدوار ہیں۔

پی ایس ایک سوگیارہ میں پندرہ امیدوارآمنے سامنے ہیں، پی ٹی آئی کے شہزاد قریشی، پیپلزپارٹی کے فیاض پیرزادہ اورایم کیوایم کے جہانزیب مغل میں کانٹے کا مقابلہ متوقع ہے، دونوں حلقوں میں سات لاکھ بائیس ہزار سے زائد ووٹرز کے لئے تین سوبیس پولنگ اسٹیشنز بنائے گئے ہیں۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے21اکتوبر کو ضمنی انتخابات کے لیے سہولت سینٹر قائم کردیا ہے، سہولت سینٹر21اکتوبر کو صبح آٹھ  سے شام 6بجے تک کام کرے گا اور متعلقہ حلقوں کے شہری تفصیلات حاصل کرسکیں گے۔

مزید پڑھیں: ضمنی الیکشن این اے 247: صدر پاکستان کی چھوڑی ہوئی نشست کی دل چسپ تاریخ

خیال رہے کہ دو ہزار تیرہ کے انتخابات سے قبل ہی این اے247تحریک انصاف کا مضبوط حلقہ بن چکا ہے، ڈاکٹر عارف علوی اس حلقے سے دوبار کامیاب قرار پائے ہیں صدر مملکت بننے کے بعد انہوں نے یہ نشست خالی کی۔

گورنر سندھ عمران اسماعیل صوبائی نشست پی ایس ایک سو گیارہ سےمنتخب ہوئے تھے تاہم گورنر سندھ بننے کے بعد انہوں یہ نشست خالی کی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں