site
stats
عالمی خبریں

تارکین وطن کو مارنے والی خاتون کیمرہ مین پر فرد جرم عائد

بوداپست: ہنگری کی عدالت نے ہنگری اور سربیا کی سرحد پر بھاگتے ہوئے مہاجرین کو لات مارنے اور ان کو گرانے والی کیمرہ مین خاتون پر نقص امن کا فرد جرم عائد کر دیا گیا ہے۔

تفصیلات کےمطابق سربیا کی سرحد پر بھاگتے ہوئے مہاجرین کو مارتے وقت کیمرہ خاتون پیٹرا لیزلو کی ویڈیو بنائی گئی جس میں وہ ایک کم عمر مہاجرین کو لات مار رہی تھیں اور پھر انھوں نے ٹانگ ڈال کر ایک مرد جس کی گود میں بچہ تھا گرایا۔
hungray-post-2

پیٹرا کو نجی ٹی وی چینل نے اس ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے بعد نوکری سے نکال دیا تھا۔

انہوں نے اپنی حرکت پر معافی مانگی اور کہا کہ تارکین وطن کو سرحد عبور کرتے ہوئے دیکھ کر وہ گھبرا گئی تھیں۔پیٹرا نے کہا کہ اس حرکت کے باعث ان کی زندگی تباہ ہو گئی ہے۔
hungray-post-image-3

ہنگری کے استغاثہ کا کہنا ہے کہ یہ ثابت کرنا کہ پیٹرا کی حرکت سے کسی کو چوٹ لگی مشکل ہو گا اسی لیے نقص امن کا فرد جرم عائد کیا گیا ہے۔’یہ بات واضح نہیں ہوئی کہ پیٹرا کی حرکت لسانی بنیادوں پر تھی یا متاثرین کا تارکین وطن ہونےپر تھی۔‘
hungray-post-4

ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ پیٹرا نے ایک مرد کو ٹانگ اڑا کر گرایا جس کی گود میں ایک بچہ بھی تھا۔یہ مرد اسامہ عبدالمحسن تھے جو شام میں فٹ بال کوچ تھے۔
hungray-post-5

واضح رہے کہ اسامہ عبدالمحسن اور ان کا خاندان سپین میں رہائش پذیر ہیں اور سپین کے ایک فٹ بال کلب میں کوچ ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top