spot_img

تازہ ترین

کراچی میں موسلا دھار بارش کا کوئی امکان نہیں، چیف میٹرولوجسٹ

چیف میٹرولوجسٹ سردار سرفراز نے کہا ہے کہ کراچی...

ایاز صادق قومی اسمبلی کے اسپیکر منتخب

مسلم لیگ ن کے سردار ایاز صدیق قومی اسمبلی...

کمالیہ: بارش میں گھر کی چھت گر گئی، ماں باپ اور بیٹا جاں بحق

کمالیہ کے علاقے فاضل دیوان میں مسلسل اور تیز...

حکومت نے پیٹرول کی قیمت میں اضافہ کردیا

نگراں حکومت نے پیٹرول کی قیمت میں 4 روپے...

فسادیوں سے قانون کے مطابق نمٹا جائے گا، نگراں وزیر اعظم

اسلام آباد: نگراں وزیر اعظم انوارالحق کاکڑ نے کہا ہے کہ فسادیوں سے قانون کے مطابق نمٹا جائے گا، انارکی پھیلانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق نگراں وزیر اعظم انوارالحق کاکڑ نے ملک میں عام انتخابات کی تکمیل کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پرامن احتجاج لوگوں کا جمہوری حق ہے لیکن کسی نے فساد برپا کرنے کی کوشش کی تو قانون کے مطابق نمٹا جائے گا۔

انھوں نے کہا 2018 میں 66 اس بار 36 گھنٹوں میں نتائج مرتب ہوئے، پولنگ کے دو ڈھائی گھنٹے بعد ہی یہ تاثر دیا گیا کہ دھاندلی ہو گئی، اور سب سے زیادہ نشستیں جیتنے والے دھاندلی کے الزامات لگا رہے ہیں۔

نگراں وزیر اعظم نے کہا ہو سکتا ہے کہیں نتائج میں بے قاعدگی ہوئی ہو، اس کے لیے متعلقہ فورم موجود ہے، رپورٹس تھیں کہ غیر ریاستی عناصر موبائل سمز کے ذریعے دھماکے کر سکتے ہیں، موبائل فون بند ہونے سے کچھ تاخیر ہوئی لیکن اسے دھاندلی نہیں کہہ سکتے۔

انھوں نے کہا بطور نگراں حکومت میں سمجھتا ہوں انتخابات شفاف اور منصفانہ ہوئے ہیں، انفرادی بے قاعدگی یا الزامات سے ہٹ کر سمجھتا ہوں کہ الیکشن شفاف ہوئے، الیکشن عمل کو مزید بہتر بناے اور نگراں حکومت کے اختیارات پر بحث کی گنجائش موجود ہے۔

انھوں نے کہا الیکشن میں نئے ووٹرز کا شامل ہونا خوش آئند ہے، نئے ووٹرز کا انتخابی عمل میں شامل ہونا سیاسی استحکام کے لیے اہم ہے، الیکشن کمیشن کو جو کام دیا گیا تھا اس پر عمل ہو چکا، کوئی غیر قانونی کام نہیں کیا تو الیکشن کمیشن سے متعلق تنقید پر ہمارا دفاع کرنا درست ہے۔

Comments

- Advertisement -