تازہ ترین

طویل مدتی قرض پروگرام : آئی ایم ایف نے پاکستان کی درخواست منظور کرلی

اسلام آباد: عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے...

ملک میں معاشی استحکام کیلئےاصلاحاتی ایجنڈےپرگامزن ہیں، محمد اورنگزیب

واشنگٹن: وزیرخزانہ محمد اورنگزیب کا کہنا ہے کہ ملک...

کچے کے ڈاکوؤں کو اسلحہ فراہم کرنیوالے 3 پولیس افسران سمیت 7 گرفتار

کراچی : پولیس موبائل میں جدید اسلحہ سندھ اسمگل...

پاکستان کو آئی ایم ایف سے 6 ارب ڈالر قرض پروگرام کی توقع

وفاقی وزیر خزانہ محمد اورنگزیب نے کہا ہے کہ...

سپریم کورٹ کے بعد لاہور ہائی کورٹ کے ججز کو دھمکی آمیز خط بھیجنے پر بھی مقدمہ درج

لاہور : سپریم کورٹ کے بعد لاہورہائی کورٹ کے ججز کو دھمکی آمیزخط بھیجنے پر مقدمہ درج کرلیا گیا ، مقدمے میں دفعہ 7اےٹی اے،507 شامل کی گئی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق لاہورہائی کورٹ کے ججز کو دھمکی آمیزخط بھیجنے پر مقدمہ درج کر لیا گیا ، دہشت گردوں کےخلاف تھانہ سی ٹی ڈی لاہور میں مقدمہ درج کیا گیا۔

پولیس نے مقدمہ ڈی ایس پی سیکیورٹی ہائیکورٹ کی مدعیت میں درج کیا ، سی ٹی ڈی حکام نے بتایا کہ مقدمےمیں دفعہ 7اےٹی اے،507 شامل کی گئی ہیں۔

حکام کا کہنا تھا کہ دھمکی آمیزخطوط کوتجزیے کےلیے پنجاب فرانزک سائنس ایجنسی بھجوادیا گیا ہے اور ملزمان کی گرفتاری کےلیےشواہدجمع کئےجارہےہیں۔

گذشتہ روز لاہورہائی کورٹ کے چار ججوں جسٹس عالیہ نیلم، جسٹس شاہد بلال حسن، جسٹس شجاعت علی خان، جسٹس عابد علی شیخ کے بعد چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ ملک شہزاد احمد خان کے نام بھی خط آیا تھا۔

عدالتی عملے نے خط کھولے بغیرپولیس کواطلاع دی اور لاہورہائیکورٹ کوملنے والےخط بھی سی ٹی ڈی ٹیم کےحوالےکر دیے گئے۔

حکام کا کہنا تھا کہ جو ڈاکیہ خط لےکرآیا اس سے تفتیش کی جارہی ہے۔

خیال رہے دھمکی آمیرخطوط کا سلسلہ اسلام آبادہائی کورٹ سے شروع ہوا تھا، جب اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق سمیت آٹھ ججوں کومشکوک خطوط موصول ہوئے تھے، عدالتی ذرائع کا کہنا ہے خط میں موجود سفوف کوانتھریکس بتایا گیا ہے، جس کا فرانزک کرایا جارہا ہے۔

Comments

- Advertisement -