The news is by your side.

Advertisement

کراچی: مواچھ گوٹھ میں دھماکے کا مقدمہ درج

کراچی: پولیس نے بلدیہ ٹاؤن کے مواچھ گوٹھ میں دھماکے کا مقدمہ نامعلوم دہشتگردوں کے خلاف درج کرلیا ، مقدمے میں دہشت گردی ، ایکسپلوزوایکٹ، قتل سمیت دیگر دفعات شامل کی گئیں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے بلدیہ ٹاؤن کے مواچھ گوٹھ میں دھماکے کا مقدمہ 3 روز بعد درج کرلیا گیا ، مقدمہ معراج محمد خان کی مدعیت میں تھانہ مدینہ کالونی میں درج کیا گیا ، مقدمے میں دہشت گردی ، ایکسپلوزوایکٹ، قتل سمیت دیگر دفعات شامل کی گئیں ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ مقدمہ نامعلوم دہشتگردوں کے خلاف درج کیا گیا ہے ، مقدمے میں مدعی نے مؤقف میں کہا ہے کہ ہم بچی کی شادی کرکے واپس آرہے تھے تو حملہ کیا گیا، معراج محمد خان حادثے کا شکار ہونے والےخاندان کےسربراہ ہیں۔

سوات میں کراچی میں ٹرک دھماکے واقعے کے خلاف احتجاج ہوا ، مظاہرین کا کہنا تھا کہ کراچی میں سوات کے13افراددہشت گردی کا نشانہ بنے، حکومت شہیدوں کےقاتلوں کوفوری گرفتارکرے۔

یاد رہے 3 روز قبل مواچھ گوٹھ میں منی ٹرک پر کریکر حملے میں دو بچوں سمیت 13 افراد جاں بحق ہوگئے تھے، ایس پی بلدیہ نے بتایا تھا کہ گاڑی میں بیس سے پچیس افراد سوار تھے،خواتین اوربچوں کی تعداد زیادہ تھی، متاثرہ خاندان لانڈھی شیرپاؤ کالونی کا رہائشی ہے جو کہ شادی کی تقریب سےواپس آرہےتھے کہ بلدیہ مواچھ موڑپر موٹر سائیکل سوار نےکریکر پھینکا، واقعے کے بعد منی ٹرک کےڈرائیورکوحراست میں لے لیا ہے۔

بعد ازاں ایڈیشنل انسپکٹر جنرل(آئی جی) کراچی غلام نبی میمن کا کہنا تھا کہ مواچھ گوٹھ دھماکے کی مختلف پہلوؤں سے تحقیقات کررہے ہیں، گاڑی کے عقب میں فیملی سوار تھی، فیملی کا تعلق سوات سے ہے، ہر پہلو سے جائزہ لے رہے ہیں، 14اگست کے حوالے سے دہشت گردی کی اطلاعات تھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں