The news is by your side.

نفرت انگیز بیانات پر پی ڈی ایم قیادت کیخلاف مقدمات کے لئے جاری اعلامیہ پشاور ہائیکورٹ میں چیلنج

پشاور : خیبرپختونخوا حکومت کی جانب سے نفرت انگیز بیانات پر پی ڈی ایم قیادت کیخلاف مقدمات کے لئے جاری اعلامیے کو پشاور ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخوا حکومت کے نفرت انگیز بیانات پر پی ڈی ایم قیادت کیخلاف مقدمات کے معاملے پر اسسٹنٹ کمشنر کو مقدمات کے لئے جاری اعلامیہ پشاور ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا گیا۔

شبیر حسین گگیانی ایڈووکیٹ نےہائیکورٹ میں رٹ دائر کردی ، جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ سیاسی مقاصد کیلئے سی آر پی سی کےسیکشن 196 کا غلط استعمال کیا گیا، سیکشن 196 کسی آفیسرکو ایف آئی آر درج کا اختیار نہیں دیتا۔

درخواست گزار کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت کا اعلامیہ غیرقانونی ہے عدالت کالعدم قرار دے اور خیبرپختونخوا حکومت کے اعلامیہ کو فوری کالعدم قراردیا جائے۔

گذشتہ روز کے پی کے دارالحکومت پشاور کے تھانہ شرقی میں وزیراعظم سمیت پی ڈی ایم رہنماؤں کے خلاف مقدمہ درج کرنے کیلیے نور شیر ایڈووکیٹ کی جانب سے داخواست دائر کی گئی تھی۔

درخواست گزار کی جانب سے اندراج مقدمہ کیلیے دائر درخواست میں وزیراعظم شہباز شریف، سابق وزیراعظم نواز شریف، پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن، ن لیگ کی نائب صدر مریم نواز، وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ، پرویز رشید، خواجہ سعد رفیق، ایاز صادق، عطا اللہ تارڑ کے نام شامل کیے گئے تھے۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ پی ڈی ایم قیادت نے ماضی میں نفرت انگیز تقاریر کی ہے اور یہ نفرت انگیز بیانات دشمن ملک کی ایما پر دیے گئے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں