site
stats
اہم ترین

مردم شماری کا انیس سال بعد باقاعدہ آغازآج سے ہوگا

کراچی : انیس سال بعد ملک بھر میں آج سے چھٹی مردم شماری کا آغاز ہوگا، محکمہ شماریات نے کراچی کو 35 سب ڈویژن میں تقسیم کیا ہے جبکہ ضلع غربی ملیراور ضلع وسطی کو حساس قراردیا گیا ہے, وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ مردم شماری کیلئے شناختی کارڈ کا ہونا لازمی نہیں۔

تفصیلات کے مطابق کراچی سمیت ملک بھر میں انیس سال بعد مردم شماری کا باقاعدہ آغاز آج سے کیا جا رہا ہے، کراچی میں مردم شماری کیلئے متعین عملے کو سامان کی ترسیل کا عمل بھی مکمل کیا جا چکا ہے۔

ذرائع محکمہ شماریات کا کہنا ہے کہ  15مارچ سے 18 مارچ تک گھر شماری اور پھر فارم 2 کا اندراج کیا جائے گا۔ محکمہ شماریات نے کراچی کو 35 سب ڈویژن میں تقسیم کیا ہے، 35 سب ڈویژن میں 359  چارج بنائے گئے ہیں۔

  359 چارج میں 2324 سرکل بنائے گئے ہیں، 2324 سرکل میں 14494 بلاکس قائم کئےگئےہیں،  15943 فیلڈاسٹاف مردم شماری کیلئے خدمات انجام دے گا۔

محکمہ شماریات کے مطابق فیلڈ اسٹاف کے ساتھ 2پولیس، 2رینجرز اہلکار اور ایک فوجی جوان ہوگا، ڈسٹرکٹ ویسٹ میں 2663 بلاکس قائم کیے گئے ہیں۔

ڈسٹرکٹ ساؤتھ میں 2124 بلاکس بنائے گئے ہیں، ایسٹ میں 2832 اورکورنگی میں 2253 بلاکس بنائے گئے ہیں۔ سینٹرل میں 3210 اورڈسٹرکٹ ملیرمیں 1412 بلاکس قائم کئے گئےہیں، ذرائع محکمہ شماریات کا کہنا ہے کہ ڈسٹرکٹ ویسٹ ملیراورسینٹرل کوحساس اضلاع قراردیا گیا ہے۔

مردم شماری کیلئے شناختی کارڈ لازمی نہیں، اسحاق ڈار

وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ مردم شماری کیلئے شناختی کارڈ کا ہونا لازمی نہیں، اگر کسی خاندان کے پاس شناختی کارڈ نہیں ہے تو وہ اپنی دیگر شناخت بھی ظاہر کرسکتا ہے۔

مزید پڑھیں : مردم شماری: غلط معلومات دینے پر قید و جرمانہ ہوگا، مریم اورنگزیب، آصف غفور

انہوں نے کہا ہے کہ مردم شماری کا شفاف انعقاد قومی ذمہ داری ہے، لہٰذا مردم شماری کا کام سو فیصد شفاف بنایا جائے گا، وزیرخزانہ کا کہنا ہے کہ مردم شماری کیلئے وزیراعلیٰ سندھ کے تعاون پر مشکور ہیں۔ پاک فوج کی شمولیت سے مردم شماری کی شفافیت میں مدد ملےگی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top