The news is by your side.

Advertisement

ای سی ایل کواب انتقامی کارروائیوں کیلئے استعمال نہیں کیا جا سکے گا، چوہدری نثار

اسلام آباد : وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار نے ی سی ایل کی نئی پالیسی کا اعلان کردیا۔ اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے چوہدری نثار نے کہا کہ ای سی ایل میں نام صرف وزارت داخلہ ہی ڈالے گی۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں ایگزٹ کنٹرول لسٹ کو انتقامی کارروائیوں کیلئے استعمال کیا گیا۔ لیکن اب ایسا نہیں ہوگا۔ ڈائریکٹوریٹ آف پاسپورٹس سے اختیار واپس لے لیا گیا ہے۔اب اعلیٰ عدلیہ کی ہدایت پر ہی کوئی نام شامل کیا جائے گا۔

چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ اعلیٰ عدالتی احکامات اور ایجنسیز کی سفارش پر نام ای سی ایل میں شامل کیے جائیں گے، انہوں  نے کہا کہ پاسپورٹ کنٹرول لسٹ سے باون ہزار افراد کے نام نکال دیے ہیں۔

وزیر داخلہ نے بتایا کہ ای سی ایل میں ڈالے جانے والے ناموں کو ری ویو کا حق حاصل ہوگا۔ تین سال میں کیس کو منطقی انجام تک بھی پہنچایا جائے گا تاہم ڈبل پاسپورٹ کا غلط استعمال کرنے والوں کو سزا پوری کرنا ہوگی۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ شجاع خانزاہ کا کیس اب تک حل طلب ہے۔ شجاع خانزاہ کا کیس بلائنڈ کیس ہے چاروں وزرائے اعلیٰ کی بیٹھک ستمبر میں لگےگی اجلاس میں آرمی چیف کو بھی بلائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ قومی سلامتی پر وزیراعظم کی سربراہی میں چاروں وزرائے اعلیٰ کا اجلاس ستمبر میں ہوگا، چوہدری نثار نے کا کہنا تھا کہ کامیاب آپریشن کے بعد سوا سال سے اغوا چینی شہری کو بازیاب کرالیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں