The news is by your side.

Advertisement

ایگزیکٹو بورڈ اجلاس ، چیئرمین نیب نے 4 انکوائریوں کی منظوری دے دی

اسلام آباد : چیئرمین نیب جسٹس (ر ) جاوید اقبال کی زیرصدارت قومی احتساب بیورو ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس نے چار انکوائریوں کی منظوری دے دی، ، چیئرمین نیب نے کہا بدعنوانی ایک ناسور ہے جو ملکی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس ر جاوید اقبال کی زیرصدارت قومی احتساب بیورو ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس ہوا، اجلاس میں پراسیکیوٹر جنرل، آپریشنز اور پراسیکیوشن حکام کی بھی شریک ہوئے۔

اجلاس نےچارانکوائریوں کی منظوری دی گئی ، جس میں ایکسائڈ بیٹریز کے مالکان ،محمد عرصلہ خان اور دیگر،واپڈہ واٹر ونگ اسلام آباد کے افسران و اہلکاروں اور دیگر،محکمہ آبپاشی راجن پور اور نشان انجینئرنگ کے افسران واہلکاران اور دیگر کے خلاف انکوائریز شامل ہیں۔

ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں سلطان علی لاکھانی اور دیگرکا معاملہ ،میسرز شان گروپ اور دیگرکا معاملہ بینک کے ساتھ سیٹلمنٹ ایگریمنٹ ہونے پر قانو ن کے مطابق نمٹا دیا ۔

اجلاس میں راجہ محمد ذرات خان آف میسرز بھاون شاہ گروپ آف کمپنیز کے ر اور دیگر کے خلاف 15 مختلف انوسٹی گیشنز ایف بی آر کو قانون کے مطابق مزید کارروائی کے لئے بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ اجلاس میں عبدالولی خان یونیورسٹی مردان کے افسران و اہلکاران اور دیگر کے خلاف انوسٹی گیشن چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا کو مزید قانونی کاروائی کے لئے بھجوانے کی منظوری دی گئی۔

اجلاس میں ورکرز ویلفئر بورڈ خیبر پختونخوا کے افسران اہلکاران اور دیگر کے خلاف انوسٹی گیشن چیف سیکرٹری خیبر پختونخواہ کو اور سردار قیصر عباس خان سابق رکن صوبائی اسمبلی پنجاب کے خلاف اکیس بورڈ آف ریونیو پنجاب کو مزید قانونی کارروائی کے لئے بھجوانے کی منظوری دی گئی۔

اجلاس میں عارف علی شاہ بخاری و دیگر کیخلاف انویسٹی گیشن بند کرنے اور صوبائی ورکرز ویلفیئر بورڈ حکومت سندھ کیخلاف ، وی سی فیڈرل اردو یونیورٹی آف آرٹس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کراچی کیخلاف ، صائمہ بلڈرزصائمہ گروپ کیخلاف ، صائمہ بلڈرز صائمہ گروپ کیخلاف انکوائری بند کی منظوری دی گئی۔

امیرزادہ خان کوہاٹی پراجیکٹ ڈائریکٹر ملیر ڈویلپمنٹ اتھارٹی کیخلاف ،ایوب فیضانی ڈی ڈی لینڈ کیخلاف، مرادعلی جونیجو سابق آفیسر ایم ڈی اے کیخلاف بشارت کلرک شاہ لطیف خان ٹاؤن سیکٹرایف22 کیخلاف انکوائری بند کرنے کی بھی منظوری دے دی گئی۔

اس موقع پر چیئرمین نیب نے کہا بدعنوانی ایک ناسور ہے جو ملکی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے، 22 ماہ میں لوٹی گئی 71ارب روپے کی رقم قومی خزانے میں جمع کرائی، بدعنوان عناصر سے لوٹی گئی رقم برآمد کرنے کیلئے کوشاں ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ احتساب سب کیلئےکی پالیسی پر سختی سے عمل کررہے ہیں، انکوائریز،انویسٹی گیشنز کو مقررہ وقت میں منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں