The news is by your side.

Advertisement

عمرکورٹ میں بچی کو ذیادتی کا نشانہ بنا کر قتل کر دیا گیا

عمرکورٹ: عمر کورٹ کے علاقے چھاچھرو روڈ سے آٹھ سالہ بچی کو اغواء کر کے ذیادتی کا نشانہ بنا کر قتل کر دیا گیا،بچی کی لاش پانی سے بھرے کھڈے سے برآمد ہوئی۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز عمرکوٹ کے علاقے چھاچھرو روڈ پر وھرو بائی باس سے لا پتہ ہونے والی آٹھ سالہ بچی درخشاں کی لاش آج تین فٹ گہرے پانی کے کھڈے سے بر آمد لی۔

ورثاء کے مطابق بچی کو زیادتی کا نشانہ بنا کر قتل کیا گیا اور اس کے بعد لاش کو سنسان جگہ پر واقع پانی کے کھڈے میں پھینک دیا، بچی کے جسم پر تشدد کے نشانات بھی ہیں۔

پولیس نے لاش کو تحویل میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے سول ہسپتال منتقل کرکے مقتول بچی کے ورثاء کا بیان قلم بند کر لیا ہے، اورورثاء کے بیان کی روشنی میں تحقیقات شروع کر دی ہیں۔

بچی سے ذیادتی ہونے کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں پولیس کا کہنا تھا کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کا انتظار ہے،اُس کے بعد ہی کوئی حتمی بات کہی جا سکے گی،تاہم اُنہوں نے تصدیق کی کہ بچی کے جسم پرتشدد کے نشانات موجود ہیں۔

پاکستان میں بچوں کے ساتھ ذیادتی کے بعد قتل کر دینے کے واقعات تشویشناک حد تک بڑھتے جا رہے ہیں،اس سے قبل قصور ذیادتی کیس نے ہمارے معاشرے کی ذبوں حالی اور قانون کی بے حسی کی قلعی کھول دی تھی۔


قصوراسکینڈل، وزیراعظم نے واقعے کا نوٹس لے لیا


بچوں سے ذیادتی کے بعد قتل کرنے جیسے ہولناک واقعات ہمارے معاشرے کے لیے کلنک کا ٹیکہ بنتے جارہے ہیں،جن کا سدباب ملزمان کو کڑی کڑی سے سزا دلا کر ہی کیا جا سکتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں