The news is by your side.

Advertisement

تحقیق میں سائنو ویک ویکسین کے بچوں پر کیا اثرات مرتب ہوئے؟

بیجنگ: چینی کمپنی کی تیار کردہ کرونا ویکسین سائنو ویک بچوں اور نوعمروں میں بھی محفوظ اور مؤثر پائی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق چینی محققین نے چینی دوا ساز کمپنی سائنوویک بائیوٹیک کی تیار کردہ کرونا وائرس ویکسین ’کرونا ویک‘ کے بچوں پر اثرات کا مطالعہ کیا ہے، جس کے نتائج خاصے حوصلہ افزا نکلے ہیں۔

اس مطالعے کے نتائج متعدی امراض سے متعلق جریدے دی لانسٹ میں شائع کیے گئے ہیں، جس میں کہا گیا ہے کہ ابتدائی طبی آزمائش میں کرونا ویک ویکسین بچوں اور نو عمروں کے لیے محفوظ پائی گئی ہے۔

تحقیق کے مطابق کرونا وائرس ویکسین ’کرونا ویک‘ کے پہلے اور دوسرے مرحلے کی طبّی آزمائش کے دوران 500 سے زائد بچوں اور نو عمروں پر اس کے اثرات سے معلوم ہوا ہے کہ اس ویکسین کی 2 ڈوزز محفوظ ہیں اور طاقت ور اینٹی باڈی رد عمل پیدا کرتی ہیں۔

ایپی ویک ویکسین کرونا کی خطرناک ترین اقسام کے خلاف بھی مؤثر

شائع شدہ مطالعے میں کہا گیا ہے کہ ویکسین کرونا ویک کی چین میں 3 سے 17 سال کی عمر کے پانچ سو سے زائد صحت مند بچوں پر بے ترتیب، ڈبل بلائنڈ، کنٹرول شدہ پہلے اور دوسرے مرحلے کی طبّی آزمائش کی گئی۔

نتائج سے ظاہر ہوا کہ ویکسین کی دو ڈوز لینے والے 96 فی صد سے زائد بچوں اور نو عمروں میں کو وِڈ 19 کے خلاف اینٹی باڈیز تیار ہوئی ہیں، جب کہ مضر اثرات معمولی یا معتدل تھے، جن میں انجیکشن والی جگہ پر درد عمومی طور پر رپورٹ کی جانے والی علامت تھی۔

تاہم، محققین کا کہنا ہے کہ ان ٹرائلز میں حصہ لینے والے رضاکاروں کی تعداد بہت کم تھی، جس کی وجہ سے نتائج کو بہت احتیاط کے ساتھ اخذ کرنا چاہیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں