site
stats
پاکستان

خدیجہ حملہ کیس، روزانہ سماعت ہو، ایک ماہ میں فیصلہ آئے، لاہورہائی کورٹ

لاہور : چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ نے قانون کی طالب علم خدیجہ پر چھریوں کے بیس سے زائد وار کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے مقدمہ کا فیصلہ تیس دن میں سنانے کا حکم جاری کردیا۔

تفصیلات کے مطابق قانون کی طالبہ خدیجہ پرساتھی طالب علم شاہ حسین کی جانب سے چھریوں کے بیس سے زائد وار کرنے کے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ نے مقدمہ کی روزانہ کی بنیاد پرسماعت کرکے تیس دن میں فیصلہ کرنے کی ہدایت جاری کی ہے۔

یاد رہے کہ قانون کی طالبہ خدیجہ صدیقی کو ساتھی طالب علم شاہ حسین نے ایک سال پہلے خنجر کے پے در پے وار کر کے شدید زخمی کردیا تھا اورفرارہوگیا تھا تاہم راہگیروں کی جانب سے بنائی گئی ویڈیوزکی بنیاد پر ملزم کو شناخت کر کے گرفتارکرلیا گیا تھا۔


خنجر حملہ:‌ قانون کی طالبہ پر ہم جماعت کے چھریوں کے تیئس وار


بعد ازاں عدالت نے ملزم شاہ حسین ضمانت کی استدعا مسترد کرتے ہوئے مقدمے کا آغاز بھی کردیا تھا لیکن محض دو ماہ بعد ہی ملزم اپنے با اثر وکیل باپ کے تعلقات کے باعث ضمانت پر رہا ہو کر نہ صرف یہ کہ جیل سے باہر آگیا بلکہ چند روز قبل وکالت کے امتحانات بھی دیے جہاں خدیجہ بھی موجود تھی۔

مظلوم طالبہ کی آہ و بکا میڈیا کے ذریعے ملک کے طول و عرض میں پھیل گئی اور مقتدر حلقوں کی توجہ حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئی جس کے بعد طالبہ نے لاہورہائی کورٹ کے چیف جسٹس سے ایکشن لینے کی استدعا کی تھی جس پر معزز جج نے مذکورہ حکم نامہ جاری کیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top