The news is by your side.

Advertisement

اسد منیر کی خودکشی، معاملہ سپریم کورٹ پہنچ گیا

اسد منیر کے آخری خط پر چیف جسٹس کا از خود نوٹس، نیب سے جواب طلب

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان کے چیف جسٹس جسٹس آصف سعید کھوسہ نے برییگیڈیٹر (ر) اسد منیر کے خط کا نوٹس لیتے ہوئے چیئرمین نیب سے جواب طلب کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق بریگیڈیئر ریٹائرڈ اسد منیر کا آخری خط سپریم کورٹ کو موصول ہوا جس پر چیف جسٹس آف پاکستان نے نوٹس لیتے ہوئے چیئرمین نیب سے جواب طلب کرلیا کہ بریگیڈیئرریٹائرڈاسدمنیر نےخود کشی کیوں کی؟۔

یاد رہے کہ 15 مارچ کو دفاعی تجزیہ نگار بریگیڈیئر ریٹائرد اسد منیر اپنے کمرے میں مردہ حالت میں پائے گئے تھے، اُن کی لاش ڈپلومیٹک انکلیو سے برآمد ہوئی تھی جس کے بعد اہل خانہ نے اُسے پمز اسپتال منتقل کیا تھا۔

پولیس ذرائع کا کہنا تھا کہ بریگیڈیئر (ر)اسد منیر نیب کی جانب سےجاری تحقیقات پر پریشان تھے، نیب کی جانب سے ان پر اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے ایف 11 میں پلاٹ بحال کرنے کا الزام تھا۔ بریگیڈیئر ریٹائرڈاسد منیرسی ڈی اے میں ممبراسٹیٹ بھی رہ چکے ہیں۔

مزید پڑھیں: سپریم کورٹ نےچیئرمین نیب سے رپورٹ طلب کرلی 

ذرائع کے مطابق بریگیڈیئر (ر) اسد منیر نے 14 مارچ کی شب پنکھے کے ساتھ لٹک کر خودکشی کی، پولیس نے رات کو لاش تحویل میں لے کر اسپتال منتقل کر دیا تھا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اسد منیر کے خودکشی کرنے کی وجہ ابھی تک سامنے نہیں آئی۔ خاندانی ذرائع نے پولیس کو اپنے بیان میں کہا کہ اسد منیر نے کہا تھا کہ یہ نیب میرا پیچھا کیوں نہیں چھوڑتا۔

خاندانی ذرائع کے مطابق اسد منیر میڈیا پر چلنے والی خبروں پر کافی پریشان تھے، گزشتہ روز قومی احتساب بیورو (نیب) ایگزیکٹو بورڈ اجلاس میں اسد منیر کے خلاف ریفرنس دائر کرنےکی منظوری دی گئی تھی۔

دوسری جانب بریگیڈئیر (ر)اسد منیر کی لاش ورثا کے حوالے کردی گئی، لاش بیٹے نے وصول کی، ترجمان پمز اسپتال کا کہنا ہے کہ لواحقین نے پوسٹ مارٹم کرنے کی اجازت نہیں دی، جس کے باعث ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے انتظامیہ کو قانونی کارروائی سے روک دیا تھا۔

بعد ازاں اُن کا نماز جنازہ اسلام آباد کے ایچ ایٹ فور میں ادا کیا گیا تھا جس میں اہل خانہ سمیت اُن کے دوست احباب نے شرکت کی تھی، پوسٹ مارٹم نہ ہونے کی وجہ سے قانونی کارروائی عمل میں نہیں لائی گئی اور نہ ہی اہل خانہ نے کوئی مقدمہ درج کرایا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں