site
stats
عالمی خبریں

مودی کےگجرات میں فرقہ وارانہ فسادات ‘ 1ہلاک‘ 14زخمی

گجرات : بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کےآبائی علاقےگجرات میں ہندو مسلم فسادات میں ایک شخص ہلاک جبکہ 14افراد زخمی ہوگئے۔

تفصیلات کےمطابق بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے آبائی علاقے گجرات میں ہندو اور مسلمان اسکول طلباء کےدرمیان ہونےوالےفسادات میں 1طالب علم ہلاک جبکہ 14افراد زخمی ہوگئے۔

گجرات میں ضلع پٹن کےگاؤں وڈاوالی میں 5000ہزار افراد کے ہجوم نے مسلمان آبادی پرحملہ کردیا اور ان کےگھروں اور گاڑیوں کو نذر آتش کردیا جس کےبعد ضلع بھر میں حالات کشیدہ ہوگئے۔

مسلم کمیونٹی کی جانب سے اس حملے کےبعد پتھراؤ کیا گیاجس کے پولیس کی جانب سے ان پر آنسو گیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج کیاگیا۔

خیال رہےکہ بھارتی ریاست گجرات کی سنگین فرقہ وارانہ فسادات کےحوالے سےتاریخ رہی ہے۔


مزید پڑھیں:سوشل میڈیا پر یو پی کے وزیراعلی پر تبصرہ، مسلمان نوجوان گرفتار


خیال رہےکہ بھارتی ریاست گجرات میں سال2002 میں ہونے والےمسلم ہندو فسادات میں ایک اندازاے کےمطابق ایک ہزار کےقریب مسلمانوں کا قتل عام کیاگیاتھا اس وقت وزیراعلیٰ نریندر مودی تھے۔

یاد رہےکہ بھارت میں سال 2013 میں سپریم کورٹ کی طرف سےگجرات میں ہونے والے فسادات کی تحقیقات کےلیےبنائےگئے پینل کی تحقیقات میں ناکافی ثبوتوں کی بنا پرنریندر مودی کےخلاف قانونی کارروائی نہیں کی گئی تھی۔

واضح رہےکہ پٹن ضلع کے انتظامی عہدیدار کےکے نائرالہ کا کہناہےکہ مسلم ہندو فسادات کےبعد صورت حال کنٹرول میں ہےاور ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لیے پولیس کی اضافی نفری تعینات ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top