18.2 C
Ashburn
بدھ, مئی 22, 2024
اشتہار

کرونا ویکسین فراہم کرنے والی کمپنی کے کروڑوں روپے روکے رکھنے کا انکشاف، کیس سندھ ہائیکورٹ میں

اشتہار

حیرت انگیز

کراچی: صوبہ سندھ میں کرونا ویکسین فراہم کرنے والی کمپنی کے کروڑوں روپے روکے رکھنے کا انکشاف ہوا ہے، سندھ ہائیکورٹ نے محکمہ صحت سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔

سندھ ہائیکورٹ میں آج منگل کو کرونا ویکسین کی فراہمی کی مد میں نجی دوا ساز کمپنی کو واجبات کی عدم ادائیگی کے کیس کی سماعت ہوئی، سندھ حکومت کی جانب سے واجبات ادا نہ کرنے پر چیف جسٹس عقیل عباسی نے فوکل پرسن پر برہمی کا اظہار کیا۔

چیف جسٹس عقیل احمد عباسی نے کہا کسی کے پیسے ہڑپ کر لیں گے تو کون بھروسا کرے گا؟ ملک کو قرض تک تو کوئی دینے کو تیار نہیں ہے، الٹا کر کے تو ملک چلانے کے لیے قرض مل رہا ہے۔

- Advertisement -

وکیل دوا ساز کمپنی نے عدالت کو بتایا کہ 65 کروڑ کے واجبات طویل عرصے سے سندھ حکومت پر باقی ہیں، سندھ حکومت نے اس سلسلے میں تین کمیٹیاں بنائیں، تینوں نے واجبات ادا کرنے کی سفارش کی، لیکن واجبات ادا نہیں کیے گئے۔

چیف عقیل احمد عباسی نے ریمارکس دیے کہ مسئلہ یہ ہے کہ رقم بڑی ہے، یہ سوچتے ہوں گے ہمیں کیا ملے گا، یہ لوگ اپنا حصہ مانگ رہے ہوں گے، عوام کا پیسہ ویسے لٹاتے رہتے ہیں اور کوئی نہیں پوچھتا، لیکن آج ان کو فکر لاحق ہو گئی ہے۔

چیف جسٹس نے کہا سیکریٹری صحت کو بلاؤ، ان سے پوچھ لیتے ہیں کہ پیسے دینے ہیں یا نہیں؟ سندھ کے محکمہ صحت کے فوکل پرسن نے کہا کہ ایک کمیٹی کے سربراہ ریٹائر ہو گئے ہیں، اس لیے اس کیس کا جائزہ لینے کے لیے وقت دیا جائے۔

چیف جسٹس نے برہمی سے کہا کرونا وبا ختم ہو چکی، اب 5 سو سال تک کمیٹیاں بناتے رہو گے یا کمیشن چاہیے؟ سندھ ہائیکورٹ نے اس کیس میں 31 مئی تک محکمہ صحت سندھ سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔

Comments

اہم ترین

اصغر عمر
اصغر عمر
اصغر عمر اے آر وائی نیوز سے بطور کورٹ رپورٹر وابستہ ہیں

مزید خبریں