The news is by your side.

Advertisement

کورونا کو من گھڑت کہنے والا اسی وائرس سے ہلاک، موت سے پہلے ویڈیو بیان

قاہرہ : مصر کا ایک شہری جس نے کرونا وائرس کو جھوٹ اور امریکی سازش قرار دیا تھا، کرونا وائرس میں مبتلا ہوکر چل بسا، موت سے پہلے اس نے اپنی غلطی کا اعتراف کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق مصر کے ایک 29سالہ شخص نے کچھ عرصہ قبل ایک ویڈیو پیغام میں کورونا وائرس کو جھوٹ قرار دیا تھا، بعد ازاں وہی محمد واحدان کرونا کا شکار ہوکر خالق حقیقی سے جا ملا۔ 29سالہ محمد واحدان کو کورونا کے حوالے سے عالمی ادارہ صحت بھی قائل نہ کرسکا اور وہ یہی سمجھتا رہا کہ یہ کورونا وائرس امریکہ کی من گھڑت کہانی ہے جس کا مقصد چین کی معیشت کو نقصان پہنچانا ہے۔

عرب نیوز کے مطابق16 مارچ کو محمد واحدان نے اپنے فیس بک پر ایک ویڈیو پوسٹ کی تھی جس میں وہ شہریوں کو کورونا کی خبریں نظرانداز کرتے ہوئے معمول کے مطابق زندگی گزارنے کی ہدایت کر رہے تھے۔

ویڈیو میں وہ جم بند ہونے اور اشیاء خورد و نوش کی ذخیرہ اندوزی پر بھی تنقید کر رہے تھے۔ اس ویڈیو پیغام کے نشر ہونے کے بعد جلد ہی محمد واحدان میں وائرس کی علامات ظاہر ہونا شروع ہو گئیں، کورونا ٹیسٹ کروانے پر نتائج مثبت آئے، لیکن تب تک وہ اپنے بھائی اور والد میں بھی جراثیم منتقل کر چکے تھے۔

محمد واحدان کو اسپتال میں داخل ہوئے دو دن ہی ہوئے تھے کہ ان کی حالت بگڑنا شروع ہوگئی، جس کے بعد انہوں نے چند اور ویڈیوز پوسٹ کیں جس میں وہ اپنی غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے وائرس کو سنجیدگی سے لینے کا کہہ رہے ہیں۔ پچھلے پیغام کے برعکس اس ویڈیو میں وہ شہریوں کو احتیاط برتنے اور گھروں میں رہنے کی تاکید کر رہے ہیں۔

محمد واحدان نے اپنے پیغام میں کہا کہ مجھے بھی گھر رہنے اور باہر نکلنے سے منع کیا گیا تھا لیکن میں نے ان وارننگز کو سنجیدگی سے نہیں لیا اور ایک جھوٹی زندگی گزارتا چلا گیا۔

واحدان نے شہریوں سے وائرس کو سنجیدگی سے لینے کی التجا کی اور بتایا کہ یہ جان لیوا مرض ہے جو جسم کے تمام حصوں کو تباہ کر دیتا ہے۔ ویڈیو پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ بھوک سے آپ نہیں مریں گے، اپنی زندگی خطرے میں نہ ڈالیں، وبا مصر میں بھی پھیل رہی ہے بالخصوص مونافیا میں۔ بدقسمتی سے میرے بہن بھائیوں کو بھی میری وجہ سے وائرس لگ گیا ہے۔ انہوں نے جلد صحت یابی کے لیے دعا کی بھی درخواست کی تھی۔

آخری ویڈیو پیغام میں واحدان نے کورونا کے آگے شکست تسلیم کرتے ہوئے کہا کہ میں مر رہا ہوں اور اگلے دن واحدان کے دوستوں نے سوشل میڈیا پر ان کی موت کی خبر شیئر کی۔ واحدان کی جب موت واقع ہوئی تو ان کے والد اور بھائی کا الگ الگ اسپتالوں میں کورونا کا علاج جاری تھا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں