The news is by your side.

Advertisement

کورونا سے خوفزدہ خاندان کا خوفناک اقدام، دیکھنے والے ہکا بکا رہ گئے

آندھراپردیش : کورونا وائرس کی تباہ کاریوں نے بھارت میں لوگوں کو اس قدر خوفزدہ کردیا کہ انہوں نے انتہائی قدم اٹھا لیا، ان کے اس اقدام سے اہل محلہ بھی پریشان ہوگئے۔

واقعہ اُس وقت منظر عام پر آیا جب گاؤں کا ایک سماجی کارکن سرکاری اسکیم کے تحت ان کو مکان کا پلاٹ الاٹ کرنے ان کی انگلیوں کے نشان حاصل کرنے کے لئے پہنچا۔

تفصیلات کے مطابق کورونا کے خوف سے ایک خاندان نے خود کو تقریباً 15ماہ تک گھر میں بند کر لیا، یہ واقعہ آندھراپردیش کے مشرقی گوداوری ضلع کے کوڈالی گاؤں میں پیش آیا۔

گاؤں کے سرپنچ کے مطابق تین افراد نے خود کو تقریباً 15 ماہ سے اپنے مکان میں محدود کرلیا، ان کے ایک پڑوسی کی کوویڈ سے موت ہو گئی تھی جس کے بعد سے ان تمام افراد نے خود کو اپنے مکان میں مقید کرلیا۔

یہ واقعہ اُس وقت منظر عام پر آیا جب گاؤں کا ایک سماجی کارکن سرکاری اسکیم کے تحت ان کو مکان کا پلاٹ الاٹ کرنے ان کی انگلیوں کے نشان حاصل کرنے کے لئے پہنچا۔

اس والنٹر نے اس بات کی شکایت گاؤں کے سرپنچ اور دوسروں سے کی۔ سرپنچ نے کہا کہ چیٹوگالابینی، اس کی بیوی اور دو بچے یہاں رہتے ہیں۔ یہ تمام کوویڈ سے خوفزدہ تھے جنہوں نے تقریبا 15 ماہ تک خود کو گھر میں بند کر لیا اور اندر سے مکان کو قفل ڈال لیا۔

آشا ورکر یا کوئی اور والنٹرجوان کے گھر جاتے، واپس ہو جانے پر مجبور ہوتے کیونکہ دروازہ کھٹکھٹانے پر اس کا کوئی جواب نہیں دیا جاتا۔حال ہی میں ان کے بعض رشتہ داروں نے بتایا کہ تین افراد نے مکان میں خود کو بند کر لیا ہے اور ان کی صحت خراب ہے۔

اس واقعے کی اطلاع پولیس کو دی گئی جس نے وہاں پہنچ کر اس خاندان کو بچایا، ان کی حالت کافی خراب تھی۔ ان کے بال بڑھ گئے تھے۔ ان  افراد نے کئی دنوں سے نہایا بھی نہیں تھا۔ ان تمام کو فوری طور پر سرکاری ہسپتال منتقل کر دیا گیا جہاں ان کاعلاج کیا جا رہا ہے۔

سرپنچ کے مطابق اگر یہ خاندان اسی طرح آئندہ تین ماہ زندگی گذارتا تواس خاندان کی موت یقینی تھی۔ انہوں نے کہا کہ والنٹر کو اس خاندان نے کہا کہ اگر وہ گھر سے باہر نکلے تو ان کی موت ہو جائے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں