The news is by your side.

Advertisement

کرونا وائرس: معاشی نقصانات سے نمٹنے کے لیے 50 ارب ریال مختص

ریاض: سعودی عرب نے کرونا وائرس سے ہونے والے معاشی نقصانات سے نمٹنے کے لیے 50 ارب ریال مختص کردیے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی عرب نے کرونا وائرس کے منفی اثرات سے نجی اداروں کو بچانے کے لیے 50 ارب ریال (13.3 ارب ڈالر) مختص کیے ہیں۔

اس رقم کے ذریعے معیشت پر مالیاتی اور اقتصادی نقصانات میں تخفیف ہوگی، خصوصاً چھوٹے اور درمیانے سائز کے اداروں کو سہارا دیا جائے گا۔

سعودی عریبین مانیٹری اتھارٹی (ساما) کا کہنا ہے کہ ہم نے ایک پروگرام تیار کیا ہے، اس پر تقریباً 50 ارب ریال خرچ ہوں گے۔ اس کے تحت متعدد اقدامات کر کے نجی اداروں کی شرح نمو بہتر بنائی جائے گی۔

ساما کا کہنا ہے کہ چھوٹے اور درمیانے سائز کے اداروں کی مدد کے لیے تین نکاتی پروگرام تیار کیا گیا ہے۔ پروگرام کا مقصد ان اداروں کو کرونا وائرس کے منفی اثرات سے نمٹنے کے لیے سہارا دینا ہے۔ احتیاطی تدابیر کے باعث سے یہ ادارے دباؤ میں آرہے ہیں، امدادی پروگرام کی بدولت ان کا یہ دباؤ کم ہوگا۔

اس پروگرام کے تحت ایک فیصلہ یہ بھی کیا گیا ہے کہ نجی اداروں کو قرضوں کی ادائیگی ملتوی کردی گئی، 30 ارب ریال اس مد میں بینکوں اور فنڈنگ کمپنیوں کے لیے رکھے گئے ہیں۔

چھوٹے اور درمیانے سائز کے اداروں کو 13.2 ارب ریال کے قرضوں کا پروگرام بھی تیار کیا گیا ہے، بینکوں اور فنڈنگ کمپنیوں کو 6 ارب ریال دیے جائیں گے تاکہ وہ چھوٹے اور درمیانے سائز کے اداروں کو قرضوں کی ضمانتوں کے پروگرام پر آنے والی لاگت نکال سکیں۔

اس سلسلے میں بینکوں اور فنڈنگ کمپنیو ں کے ساتھ رابطے کیے جارہے ہیں۔

دوسری جانب امارات میں بھی قومی معیشت کو سہارا دینے اور صارفین و کمپنیوں کو نقصانات سے بچانے کے لیے 100 ارب درہم (27.2 ارب ڈالر) کی منظوری دی گئی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں