The news is by your side.

Advertisement

دنیا کا پہلا “کورونا وائرس پاسپورٹ” جاری

بیجنگ : کورونا وائرس کی عالمی وبا کے پیش نظر چینی حکومت نے وبا کے پھیلاؤ کے سد باب اور شہریوں کی فضائی آمد و رفت کے لیے”وائرس پاسپورٹ” متعارف کرادیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق عالمی وبا کورونا کے دوران سفری مشکلات کو حل کرنے کے لیے چین نے اپنی شہریوں کے لیے “وائرس پاسپورٹ” کے اجراء کا اعلان کیا ہے۔

یہ پاسپورٹ ہیلتھ سرٹیفکیٹ کے طرز پر تیار کیا گیا ہے جس میں مسافر کے کورونا ٹیسٹ، ویکسی نیشن اور ضروری طبی معلومات درج ہیں جب کہ پاسپورٹ ہونے کی وجہ سے اس میں سفری تفصیلات بھی موجود ہوں گی۔

واضح رہے کہ چین میں بیرون ملک سے داخل ہونے یا باہر جانے کے لیے مسافروں کو وائرس پاسپورٹ دکھانا ہوگا تاہم ابھی یہ لازمی نہیں کیونکہ یہ ابتدائی طور پر صرف چینی شہریوں پر لاگو ہوگا البتہ بہت جلد اس نظام کو لازمی اور غیر ملکی مسافروں پر بھی لاگو کیا جائے گا۔

اس حوالے سے چینی امور خارجہ کے ترجمان نے بتایا کہ “وائرس پاسپورٹ” عالمی معاشی بحالی کو فروغ دینے اور سرحد پار سفر کو آسان بنانے کے لئے تیار کیا جارہا ہے۔ یاد رہے کہ یہ دنیا کا پہلا وائرس پاسپورٹ ہوگا۔

اس کے علاوہ دنیا کے دیگر ممالک میں بھی وائرس پاسپورٹ جیسی دستاویز پر غور کیا جا رہا ہے امریکہ اور برطانیہ اسی طرح کے اجازت نامے پر عمل درآمد کے لیے غور کر رہے ہیں۔

دوسری جانب یورپی یونین ویکسین “گرین پاس ” کے اجراء پر بھی کام کر رہی ہے جس سے شہریوں کو رکن ممالک اور بیرون ملک سفر کرنے کا موقع ملے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں