The news is by your side.

Advertisement

سابق کرپٹ افغان پارلیمنٹیرینز کے اکاؤنٹس منجمد کر دیے گئے

کابل: افغانستان کی سابق حکومت کے بد عنوان عہدے داروں اور پارلیمنٹیرینز کے اکاؤنٹس منجمد کر دیے گئے۔

افغان میڈیا کے مطابق سابق افغان حکومت کے کرپٹ عہدے داروں کے خلاف اقدامات شروع ہو گئے، افغان مرکزی بینک نے کارروائی کرتے ہوئے سابق کرپٹ پارلیمنٹیرینز کے اکاؤنٹس منجمد کر دیے۔

افغان میڈیا کا کہنا ہے کہ بدعنوان افراد کے اکاؤنٹس افغان سینٹرل بینک کی جانب سے منجمد کیے گئے ہیں۔

امریکی میڈیا رپورٹس کے مطابق افغانستان کے مرکزی بینک میں تقریباً 10 ارب ڈالر کے ذخائر ہیں، تاہم افغانستان کے ذخائر کی اکثریت فیڈرل ریزرو بینک آف نیویارک کے پاس ہے۔

افغانستان کے ساتھ تجارت پاکستانی روپے میں ہوگی، وزیر خزانہ

ایک قانونی اور مالیاتی ماہر کا کہنا ہے کہ طالبان کی جانب سے افغان مرکزی بینک کے تقریباً 10 ارب ڈالر کے ذخائر پر ہاتھ ڈالنے کا کوئی امکان نہیں ہے، یہ ممکن ہے کہ زیادہ تر اثاثے آنے والی کئی دہائیوں تک امریکی بینک کھاتوں میں منجمد رہیں۔

کارنیل یونیورسٹی کے قانون اور مالیات کے پروفیسر رابرٹ ہاکیٹ کا کہنا تھا کہ یہ بنیادی طور پر قانونی طور پر ناممکن ہے کیوں کہ طالبان کو امریکا کی طرف سے ایک جائز حکومت کے طور پر تسلیم نہیں کیا گیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں