The news is by your side.

Advertisement

نورمقدم قتل کیس : مرکزی ملزم ظاہرجعفر سمیت تمام ملزمان 23 ستمبر کو طلب

اسلام آباد: ڈسٹرکٹ اینڈسیشن کورٹ نے نورمقدم قتل کیس میں ظاہرجعفر سمیت تمام ملزمان 23 ستمبر کو طلب کرتے ہوئے کہا تمام ملزمان کی حاضری کےبعدچالان کی کاپیاں تقسیم ہوں گی۔

تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ اینڈسیشن کورٹ اسلام آباد میں‌ نور مقدم قتل کیس کی سماعت ہوئی ،ایڈیشنل سیشن جج عطاربانی نے کیس کی سماعت کی، مرکزی ملزم ظاہرجعفر ،والدین اور3 دیگرملزمان عدالت کے سامنے پیش ہوئے۔

وکیل نے بتایا کہ 6 دیگرتھیرپی ورکس کےملزمان ضمانت پرہیں ،عدالت طلب کرلے، جس پر عدالت نے کہا جوملزمان رہ گئےہیں ان کوآئندہ سماعت پرحاضری کےلیےبلارہےہیں، جب تمام ملزمان کی حاضری لگ جائےگی توچالان کی نقول تقسیم کریں گے۔

وکیل راجہ رضوان عباسی کا کہنا تھا کہ ان کیمرہ سماعت کی درخواست دیں گے، جس پر عدالت نے کہا جب درخواست آئےگی توقانون کےمطابق دیکھ لیں گے۔

عدالت نے نورمقدم قتل کیس میں ظاہرجعفر سمیت تمام ملزمان 23 ستمبر کو طلب کرتے ہوئے کہا تمام ملزمان کی حاضری کےبعدچالان کی کاپیاں تقسیم ہوں گی، بعد ازاں سماعت ملتوی کردی گئی۔

اس سے قبل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں نورمقدم قتل کیس کی سماعت سیشن جج کامران بشارت مفتی نےکی تھی ، مقدمےکاتفتیشی افسراور ملزمان کےوکلاعدالت میں پیش ہوئے تھے ، جس کے بعد عدالت نےکیس ایڈیشنل سیشن جج عطاربانی کےپاس ٹرانسفرکردیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں