The news is by your side.

Advertisement

کرونا انسانوں سے جانوروں میں منتقل ہونے لگا

اوہائیو: کرونا وائرس اب انسانوں سے جانوروں میں بھی منتقل ہونے لگا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سائنس دانوں نے خبردار کیا ہے کہ دنیا بھر میں کووِڈ 19 کی اب وبا جنگلی حیوانات میں بھی پھیلنا شروع ہو گئی ہے، انسان سے حیوانات میں پھیلنے والی یہ وبا خاص طور پر ہِرنوں میں تیزی سے پھیل رہی ہے۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ ہرنوں میں کرونا وائرس کا پھیلنا انسانوں کے لیے پریشانی کا سبب بن سکتا ہے، امریکا میں کی گئی تحقیق کے مطابق کم از کم 6 کیسز میں انسانوں سے ہرنوں میں کووِڈ 19 کی منتقلی کی تصدیق ہوئی ہے۔

اس سلسلے میں اوہائیو اسٹیٹ یونیورسٹی کے محققین نے شمال مشرقی اوہائیو کے 9 مختلف علاقوں میں 360 جنگلی سفید دم والے ہرنوں کی ناک سے نمونے لیے تھے، 6 مقامات پر 35 فی صد سے زیادہ ہرنوں میں وائرس کی کم از کم تین مختلف قسموں کا جینیاتی مواد پایا گیا۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ ہرنوں سے انسانوں کو وائرس کی منتقلی کا فی الوقت کوئی ثبوت موجود نہیں ہے لیکن ایسا ہونا ناممکن بھی نہیں ہے۔

اگرچہ کرونا وائرس کے ہرن سے انسانوں میں پھیلنے کے کوئی کیسز رپورٹ نہیں ہوئے ہیں، تاہم محققین نے خبردار کیا ہے کہ اگر جانور وائرس کا ذریعہ بن جاتے ہیں تو ہرن میں وائرس کی گردش ممکنہ طور پر انسانوں کے لیے خطرہ بن سکتی ہے۔

پینسلوانیا یونیورسٹی سے ماہرِ سمیات سریش کُچیپودی نے کہا ہے کہ وائرس کا جنگلی حیوانات میں موجود ہونا اور انسانوں کا اس سے بے خبر ہونا پریشان کن بات ہے، ایسے حالات میں ہم اچانک کسی نئے وائرس کا شکار ہو سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل اوہائیو اور پینسلوانیا یونیورسٹیز کی تحقیقات نے ثابت کیا تھا کہ کووِڈ 19 وائرس انسانوں سے حیوانات کو منتقل ہو سکتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں