قربانی کے لیے چھری تلے خود لیٹ جانے والا حیرت انگیز جانور -
The news is by your side.

Advertisement

قربانی کے لیے چھری تلے خود لیٹ جانے والا حیرت انگیز جانور

کامونکی: عیدالاضحیٰ کے موقع پر سنت ابراہیمی پر عمل پیرا ہوتے ہوئے مسلمانانِ عالم جانوروں کی قربانی کرتے ہیں اور کامونکی میں ایک گائے ایسی بھی ہے جو کہ قربانی کے لیے خود بخود لیٹ جاتی ہے۔


ویڈیو دیکھنے کے لیے خبر کے آخرمیں اسکرول کریں


عید الاضحیٰ قربانی کے ایک ایسی عظیم واقعے کی یادگار ہے جس کی تاریخ عالم میں نظیر ملنا ہے مشکل ہے‘ جب ایک عظیم باپ ا للہ کے حکم کی تکمیل میں اپنے عظیم بیٹے کی قربانی پیش کرنے کے لیے بیت اللہ پہنچتا ہے۔

جی ہاں یہ واقعہ جیسا کہ آپ سب جانتے ہیں حضرت ابراہیم خلیل اللہ اور حضرت اسماعیل ذبیح اللہ سے منسوب ہے کہ جب حضرت ابراہیم ؑ نے خواب دیکھا کہ وہ اپنے بیٹے کو اپنے ہی ہاتھوں سے اللہ کی راہ میں ذبح کررہے ہیں۔

تین دن لگاتار ایک ہی خواب دیکھنے کے بعد حضرت ابراہیم اپنے پسر اسماعیل کو لیے اللہ کے گھر کی جانب بڑھے اور مخصوص مقام پر انہیں لٹا کر ان کے ہاتھ پیرباندھے اپنی آنکھوں میں پٹی باندھی اور ارادہ کیا کہ چھری حضرت اسماعیل کے گلے پررواں کردیں۔

ایسے میں مشیت الہیٰ جوش میں آئی اور جنت سے ایک مینڈھا چلا اور حضرت اسماعیل علیہ السلام کی جگہ چھری مینڈھے کے حلقوم پر چل گئی‘ اسی دن سے عرب میں قربانی کی سنت ابراہیمی جاری ہوئی جسے اسلام نے بے پناہ فضیلت دی۔

قرآن نے اس واقعے کو کچھ اس طرح بیان کیا ہے کہ

اے میرے پروردگار مجھ کو نیک بیٹا عطا فرما۔ پس ہم نے ان کو ایک بردبار بیٹے کی بشارت دی۔ پھر جب وہ (اسمٰعیل) ان کے ساتھ دوڑنے (کی عمر) کو پہنچے فرمایا اے میرے بیٹے، میں خواب میں دیکھتا ہوں کہ میں تم کو ذبح کر رہا ہوں پس تم بھی غور کرلو کہ تمہارا کیا خیال ہے (اسمٰعیل نے بلا تردد) عرض کیا اے اباجان (پھردیر کیا ہے) جو کچھ آپ کو حکم ہوا کر ڈالئے (جہاں تک میرا تعلق ہے) آپ ان شاء اللہ مجھے صبر کرنے والوں میں پائیں گے۔ پھر جب دونوں نے (اللہ کا) حکم مان لیا اور (ابراہیم نے) ان کو ماتھے کے بل لٹایا۔ اور ہم نے ان کو ندا دی کہ اے ابراہیم (کیا خوب) تم نے اپنا خواب سچا کر دکھایا۔ ہم نیکو کاروں کو یوں ہی بدلہ دیتے ہیں۔ (بے شک باپ کا بیٹے کے ذبح کے لئے تیار ہوجانا) یہ ایک بڑی صریح آزمائش تھی (حضرت ابراہیم اس آزمائش میں پورا اترے) اور ہم نے ایک عظیم قربانی کو ان کا فدیہ (بنا) دیا۔

(الصفت، 37 : 100 – 107)

اسی عظیم الشان قربانی کی یاد میں مسلمان ہر سال کروڑوں جانوروں کی قربانی کرتے ہیں اور مقصد کے لیے جانور پالے جاتے ہیں ۔ ایسے ہی پاکستان کے ایک علاقے کامونکی میں یونس نامی ایک شخص نے ایک جانور پالا ہے جس کی انفرادیت اپنی جگہ بے مثال ہے۔

یونس نامی یہ شخص جانور کو کہتا ہے کہ اللہ کی راہ میں قربان ہوجا تو جانور انتہائی عظیم فرمانبرداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے خود زمیں پرلیٹ جاتا ہے اور اپنے ہاتھ پاؤں ڈھیلے چھوڑ کر آنکھیں بند کرلیتا ہے۔

انسان تو اپنے رب سے کیے گئے وعدے کی پیروی میں قربانی کرتے ہیں لیکن ایک جانور کا ایسے جذبے کا مظاہرہ کرنا یقیناً باعثِ حیرت اور اللہ کی نشانیوں میں سے ایک نشانی ہے۔

نوٹ: یہ ویڈیو’ایمز‘ نامی ادارے نے اپنے فیس یوٹیوب پر اپ لوڈ کی ہے جسے معلوماتِ عامہ کے فروغ کے جذبے کے تحت شائع کیا جارہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں