گائے کوذبح کرنے والے کا قتل گناہ نہیں، انتہا پسند جریدہ کی ہرزہ سرائی -
The news is by your side.

Advertisement

گائے کوذبح کرنے والے کا قتل گناہ نہیں، انتہا پسند جریدہ کی ہرزہ سرائی

نئی دہلی : بھارت میں ہندوانتہاپسندوں کی مسلمانوں کے خلاف زہراگلنے کی مہم میں تیزی آگئی ہے۔ انتہاپسند جریدے کاکہنا ہے گائے ذبح کرنے والے کوقتل کرنا گناہ نہیں۔

بھارت میں انتہاپسندوں نے مسلمانوں پرزندگی تنگ کردی۔ گائے کا گوشت کھانے کا بہانہ بنا کرکسی مسلمان کی جان لینا کوئی بڑی بات نہیں رہی۔

ہندو تنظیم راشٹریہ شِوم سیوک سنگ(آر ایس ایس )کے جریدے”آرگنائزر“نے لکھا ہے کہ ہندوﺅں کی مذہبی کتاب میں لکھا ہے کہ گائے ذبح کرنے والے کو قتل کرنا کوئی گناہ نہیں ہے،۔

انتہاپسند ہندوجریدے کا جلتی پرتیل چھڑکنے کے مصداق یہ کہنا ہے کہ مذہبی کتابوں کے مطابق گائے کوذبح کرنے والے کوقتل کرنا کوئی گناہ نہیں۔

دلی میں مسلمان کا قتل دفاعی عمل تھا۔ انتہاپسندی میں اندھے جریدے نے اس پرہی بس نہیں کیا بلکہ مسلمانوں پرظلم کے خلاف آواز بلند کرنے والے اوربطوراحتجاج سرکاری اعزازواپس کرنے والے ناموربھارتی ادیبوں کو بھی نہیں بخشا اورانہیں سیکولربیمارقراردےڈالا۔

بھارت میں حکمراں بی جے پی کاجھکاؤ انتہاپسندوں کی جانب ہونے کےباعث مسلمانوں کے خلاف انتہاپسندی کی لہرروکنے میں مودی سرکارمکمل طورپرناکام ہوچکی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں