The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں بھی اب کرکٹ کھیلی جائے گی

ریاض: سعودی عرب میں بھی اب کرکٹ کھیلی جائے گی، مختلف ممالک کے سفیروں نے سعودی حکومت کے اس منصوبے پر اظہار مسرت کیا ہے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق کرکٹ کھیلنے والے ممالک کے سفارت کاروں نے سعودی عرب کرکٹ فیڈریشن کی جانب سے ملک میں کرکٹ کے فروغ کے لیے شروع کیے گئے پروگراموں پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔

گزشتہ ہفتے سعودی عرب کرکٹ فیڈریشن (ایس اے سی ایف) کے چیئرمین شہزادہ سعود بن مشال ال سعود نے ایک انٹرویو میں سعودی عرب میں کرکٹ کے فروغ کے بڑے منصوبوں کا اعلان کیا تھا اور اس حوالے سے کیے جانے والے اقدامات کا ذکر بھی کیا تھا، جن سے کمیونٹی، کلب اور عالمی سطح پر مقامی شہریوں اور غیر ملکی تارکین وطن کی اس کھیل میں شرکت بڑھے گی۔

سعودی عرب کرکٹ فیڈریشن نے سرکاری، نیم سرکاری اور غیر سرکاری اداروں کے ساتھ متعدد معاہدے اور ایم او یوز پر دستخط کیے ہیں۔ ان میں کھیل کے حوالے سے آگاہی پھیلانے، پورے ملک میں کرکٹ کی سہولیات میں اضافے اور اسکول پروگراموں کے ذریعے سعودی نوجوانوں کو کھیل سے متعارف کروانے کے منصوبے شامل ہیں۔

کئی دہائیوں سے سعودی عرب میں کمیونٹی کی سطح پر کرکٹ نہایت مقبول ہے اور پاکستان، سری لنکا اور برطانیہ کے سفارت کاروں اور دیگر شخصیات نے مشغولیت بڑھانے اور مختلف قومیتوں کے مابین ہم آہنگی کو فروغ دینے کے نئے منصوبوں کی حمایت کی ہے۔

سعودی عرب میں تعینات پاکستانی سفیر راجا علی اعجاز نے اس حوالے سے بتایا کہ صرف ایک سال میں ایس اے سی ایف کی اتنی ترقی خوشی کی بات ہے۔ میں ذاتی طور پر بہت خوش ہوں کہ کرکٹ سعودی معاشرے میں جڑیں پکڑ رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم پاکستانی واقعی کھیل کے بارے میں جذباتی ہیں اور سعودی عرب میں کرکٹ کی سرگرمیوں کا آغاز محبت بھرے سلوک سے کم نہیں ہے، امید ہے کہ ایس اے سی ایف کے چیئرمین کے وژن پر کامیابی کے ساتھ عمل ہوگا۔ ان کا سنہ 2021 میں ٹورنامنٹس کے انعقاد کا شیڈول متاثر کن ہے۔

ان مقابلوں میں نیشنل کرکٹ چیمپئن شپ بھی شامل ہے، جو 11 شہروں میں کھیلی جاتی ہے اور چار پروگراموں کا حصہ ہے، جس پر ایس اے سی ایف نے سعودی سپورٹس فار آل فیڈریشن کے ساتھ دستخط کیے تھے۔ فروری 2021 میں منعقد ہونے والا یہ سعودی عرب کی تاریخ کا سب سے بڑا کرکٹ ٹورنامنٹ ہے۔

برطانیہ کے سفیر برائے سعودی عرب نیل کرومپٹن نے بھی خوشی کا اظہار کیا ہے، ان کا کہنا تھا کہ ایک کرکٹ فین کی حیثیت سے میں دوسروں کو کھیلتا دیکھ کر ہمیشہ خوش ہوتا ہوں۔

سعودی عرب میں ہونے والی ان تبدیلیوں کا خیر مقدم کرنے والوں میں کرکٹر عبدالقادر خان بھی شامل ہیں، وہ اس وقت ریاض کرکٹ ایسوسی ایشن کی جانب سے کھیل رہے ہیں اور سعودی عرب کی جونیئر اور سینیئر دونوں سطحوں پر نمائندگی کر چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اب سعودی عرب میں کرکٹ کو حکومتی سرپرستی حاصل ہو گئی ہے۔ اب یہاں کرکٹ تیزی سے پھیلے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں