The news is by your side.

Advertisement

پشاور میں‌ دہشت گردی کا بڑا منصوبہ ناکام، کالعدم شدت پسند تنظیم کے چار کارندے گرفتار

پشاور: انسداد دہشت گردی فورس نے ضلع خیبر میں کارروائی کر کے کالعدم تنظیم کے چار دہشت گردوں کو گرفتار کرلیا۔

اے آروائی نیوز کے مطابق انسداد دہشت گردی فورس (سی ٹی ڈی) نے خفیہ اطلاعات پر کالعدم تنظیموں القاعدہ، داعش کے خلاف کارروائی کی۔

سی ٹی ڈی نے ضلع خیبر میں کارروائی کے دوران 4 دہشت گردوں کو گرفتار کیام جن کے قبضے سے بڑی مقدار میں اسلحہ، دیگر ہتھیار اور دہشت گردی میں استعمال ہونے والے آلات و مواد برآمد ہوا۔

سی ٹی ڈی حکام کے مطابق دہشت گردوں کا تعلق کالعدم القاعدہ اور داعش سے ہے، جو پشاور اور اطراف میں بڑی کاررائی کا منصوبہ بنارہے تھے۔

کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ نے اس کارروائی کو بڑی پیشرفت قرار دیتے ہوئے کہا کہ بروقت کارروائی سے دہشت گردی کا منصوبہ ناکام ہوگیا۔

مزید پڑھیں: میرعلی میں انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن ، 2 دہشت گرد ہلاک

قبل ازیں سی ٹی ڈی بنوں ریجن، پولیس اورحساس اداروں نے انٹیلی جنس کی بنیاد پر آپریشن کے دوران 2 دہشت گردوں کو ہلاک کیا۔

حساس اداروں نے مشترکہ کارروائی میرعلی کے گاؤں بوب علی سپین وام کے حدود میں کی تھی، جس میں دو دہشت گرد ہلاک جبکہ باقی فرار ہوگئے تھے۔

آپریشن کے دوران دہشت گردوں نے چھاپہ مارٹیموں پراچانک فائرنگ شروع کردی تھی۔ سی ٹی ڈی کا کہنا تھا کہ دہشت گردوں سے ایس ایم جی، ہینڈگرنیڈ، میگزین اورکارتوس برآمد ہوئے تاہم دیگر دہشت گرد رات کے تاریکی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے فرار ہوگئے۔

حکام کے مطابق فرار دہشت گردوں کی گرفتاری کیلئے مشترکہ سرچ آپریشن جاری ہے۔

سی ٹی ڈی نے بتایا کہ دہشت گرد ٹارگٹ کلنگ، بھتہ خوری ،بم دھماکوں،فورسزپرحملوں میں ملوث تھے ، دہشت گردوں کاتعلق کالعدم ٹی ٹی پی کے لوکل کمانڈر سے ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں