The news is by your side.

موسم سرما میں سفید زیرے کا استعمال : حیرت انگیز فوائد جانیے!

زیرے کا استعمال برس ہا برس سے ہمارے پکوانوں کی تیاری کا اہم جز ہے، یہ نہ صرف ہاضم بلکہ جسمانی قوت کے اضافے میں بھی اہم کردار ادا کرتا ہے۔

زیرے میں آئرن کی اچھی خاصی مقدار پائی جاتی ہے اس لیے یہ نظام ہاضمہ کو بہتر بناتا، مدافعتی نظام کی قوت بڑھاتا اور اینٹی ریڈیشن کے لیے کام انجام دیتا ہے۔

سردی کے موسم میں بھی اس کے استعمال کی مخصوص افادیت ہے جو ہمیں نزلہ و زکام اور کھانسی سے بچانے کیلئے جادوئی اثر رکھتی ہے۔

سفید زیرے میں آئرن، کاپر، کیلشیم، پوٹاشیئم، میگنیشئم، زنک، سیلینئیم اور مینگنیز پائے جاتے ہیں، کاپر خون میں سرخ خلیات بنانے میں مدد دیتا ہے۔

زیرہ کا استعمال صدیوں سے کھانوں میں بطور مصالحے اور خوشبو کے لیے کیا جاتا رہا ہے، زیرہ نہ صرف آپ کو صحت مند رکھتا ہے بلکہ یہ آپ کی جلد کے بھی کئی مسائل حل کرنے کی بھرپور صلاحیت رکھتا ہے۔

زیرہ میں موجود اینٹی آکسیڈینٹ آپ کے مدافعتی نظام کو مضبوط بنانے میں مددفراہم کرتے ہیں اس طرح جسم حملہ آور بیکٹیریا، وائرس، فنگس اورجراثیم سے محفوظ رہتا ہے۔

انیمیا کا مؤثر علاج
زیرہ آئرن سے بھرپور ہوتا ہے، جو خون کے سرخ خلیوں کی پیداوار کے لیے ایک اہم معدنیات ہے۔ اسی لیے زیرہ پر مشتمل پکوانوں کو غذا میں شامل کرنا خون کی کمی کو دور کرنے کا ایک ذائقہ دار طریقہ ہے خاص کر آئرن کی کمی جو جسم میں انیمیا کا سبب بنتی ہے۔

کینسر سے بچاؤ
طبی حکام کے مطابق زیرہ میں موجود بعض مرکبات بہترین اینٹی کینسر ایجنٹ کے طور پر کام کرتے ہیں۔ مطالعات سے پتہ چلتا ہے کہ یہ مرکبات خاص طور پر چھاتی اور بڑی آنت کے کینسر کو روکنے میں معاو ن ثابت ہوتے ہیں۔

عام سردی کا علاج
موسم سرما میں ہونے والے نزلہ و زکام سے بچنے کے لیے ریرہ ایک بہترین علاج ثابت ہوسکتا ہے۔ اس کی بنیادی وجہ اس میں موجود وٹامن سی ہے جو اس کیفیت کو دور کرنے میں اہم کرادار ادا کرتاہے۔ اس مقصد کے لیے زیرہ کی زائد مقدار سوپ اور اسٹومیں شامل کر کے استعمال کی جاسکتی ہے تاکہ زکام سے فوری راحت مل سکے۔

بدہضمی کیلئے انتہائی مؤثر
زیرہ کو پیٹ کے امراض خاص کرہاضمہ کے لیے بہترین تصور کیاجاتا ہے بد ہضمی کی صورت میں ایک چائے کا چمچ ایک کپ ابلتے پانی میں کچھ دیر کے لیے بھگودیں پھر اسے چھان کر وقفے وقفے سے استعمال کریں اس طرح بد ہضمی ختم ہوجائے گی۔ جبکہ اسہال میں اس کی چائے بھی کافی افادیت رکھتی ہے۔

پھوڑے پھنسی سے نجات
اس مقصد کے لیے زیرے کو سرکے کے ساتھ ملا کر متاثرہ جگہ پر لگانے سے حیرت انگیز نتائج سامنے آتے ہیں کیونکہ اس مکسچر میں بہترین اینٹی مائیکروبائل خصوصیات موجود ہوتی ہیں جو بیکٹیریا کو ختم کرنے اور جلد کی مذکورہ حالت کے علاج کو تیز کرنے میں مدد گار ثابت ہوتی ہیں۔

پمپل اور ایکنی
یہ بات تو سب ہی جانتے ہیں کہ زیرہ میں وٹامن ای موجود ہوتا ہے جس میں زبردست اینٹی آکسیڈینٹ اور سوزش کو دور کرنے کی خصوصیات پائی جاتی ہیں، اس لیے ایکنی اور مہاسوں سے نمٹنے کے لیے اس مصالحے کا استعمال کیا جا سکتا ہے۔ جلد کے ان مسائل سے نجات کے لیے زیرے میں پانی کے چند قطرے ڈال کر ایک گاڑھا سا پیسٹ بنائیں اور اسے ایکنی اور مہاسوں پر لگائیں اور خشک ہونے پر پانی سے دھولیں۔

خارش سے چھٹکارا
موسم سرما میں خشک جلد پر اکثر خارش ہونے لگتی ہے تو ایسی صورت میں زیرہ سے فائدہ اٹھایا جاسکتا ہے۔ کسی بڑے برتن میں پانی لے کراس میں زیرہ دال ابال لیں اب اس پانی کو نہانے کے پانی میں شامل کرکے متاثرحصے کو اس میں کچھ دیر کے لیے ڈبو کر رکھیں یہ خارش کا سب سے مؤثر علاج ہے۔

یومیہ کتنا استعمال کرنا چاہیے؟
زیرہ بطور خوراک استعمال کرنا انتہائی محفوظ ہے کیونکہ اس میں کوئی زہریلا مادہ شامل نہیں ہوتا چاہے آپ اسے زیادہ مقدار میں ہی استعمال کیوں نہ کرتے ہوں یہ جسم کو کوئی تکلیف نہیں دیتا بلکہ فائدہ ہی فائدہ دیتا ہے اور ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر آپ زیرے کو بطور ہربل سپلیمینٹ استعمال کر رہے تو روزانہ300 سے 600 ملی گرام استعمال کر سکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں