The news is by your side.

Advertisement

کشمیر‌ میں کرفیو کا 85 واں روز، ایک اور نوجوان شہید، تعداد 108 ہوگئی

سری نگر : مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم جاری ہیں، وادی میں کرفیو کا آج پچاسی واں روز ہے، بھارتی فوج کی فائرنگ سے ایک اور کشمیری نوجوان جان کی بازی ہار گیا، دفتر خارجہ نے کشمیر میں بھارتی جارحیت کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشت گردی تاحال جاری ہے، ستمبر میں 44 کشمیریوں نے جام شہادت نوش کیا اور 5 ہزارسے زائد کشمیری پیلیٹ گن اور بھارتی تشدد سے زخمی ہوگئے۔

بھارتی فورسز وادی میں چادر اور چاردیواری کا تقدس پامال کررہی ہیں، تلاشی کے دوران ایک بزرگ خاتون دل کا دورہ پڑنے سے جان کی بازی ہار گئیں جبکہ بڈگام میں آج مزید ایک کشمیری نوجوان کو شہید کردیا گیا۔

حریت کانفرنس نے بھارتی مظالم کے خلاف احتجاج میں چھ اکتوبر تک توسیع کردی ہے۔

دوسری جانب پے درپے ناکامیوں کا غصہ بھارت نے اپنے ہی کمانڈر پرنکال دیا۔اڑی حملے کے بعد اڑی بریگیڈ کے کمانڈر کو تبدیل کرکے نیا کمانڈر تعینات کردیا گیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے اپنے بیان میں کشمیریوں کے قتل عام کی مذمت کرتے ہوئے بتایا کہ بھارتی فوج نے آج بھی کشمیری نوجوان مظفراحمد کو شہید کیا۔

دفتر خارجہ کا کہنا ہے گزشتہ تین ماہ میں بھارتی فوج نے سو سے زائد کشمیریوں کو شہید کیا ہے، دفتر خارجہ کے ترجمان نے اقوام متحدہ سے بھارتی فوج  کے ظلم کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کشمیرمیں کرفیو کا 82 واں روز، شہدا کی تعداد 106 ہوگئی

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں