The news is by your side.

Advertisement

یوکرین جنگ : بیٹی باپ کی لاش دیکھ کر ہوش کھو بیٹھی، تصویر نے دل دہلا دیئے

کیف : یوکرین میں مسلسل ایک ماہ سے جاری روسی بمباری سے سینکڑوں زندگیاں تباہ ہوگئی ہیں، بہت سے بے گناہ لوگ موت کی آغوش میں چلے گئے۔

یوکرینی صدر وولودیمیر زیلنسکی نے پوری دنیا سے اپیل کی ہے کہ وہ جنگ کی زبانی مذمت کے علاوہ یکجہتی دکھانے کے لیے سڑکوں پر نکل آئیں۔

یوکرین کے دارالخلافہ کیف کی صورتحال انتہائی تشویش ناک ہے ہر طرف آگ کے شعلے تو کہیں دھوئیں کے بادل شہر کی فضاؤں کو آلودہ کیے ہوئے ہیں۔

ایسے میں ایک تصویر نے دیکھنے والوں کے دل دہلا دیے، تصویر دیکھ کر اندازہ ہوجاتا ہے کہ انسان مجبوریوں کے آگے کتنا بے بس ہوجاتا ہے۔

اس تصویر کی کہانی ایک باپ بیٹی کی ہے، جس میں گھر میں رہ کر باپ کا انتظار کرنے والی لڑکی کو اس کی لاش ملی ایک بم حملے میں اس کا باپ زندگی کی بازی ہار گیا۔

مقامی انگلش ٹیچر نے میڈیا کو بتایا کہ وہ اپنے والدین کے ہمراہ ایک بیڈ روم والے اپارٹمنٹ میں رہائش پذیر ہے میں گھر کے کچن میں آن لائن سبق کی تیاری کر رہی تھی کہ اچانک گولہ باری شروع ہوگئی۔

اس کا کہنا تھا کہ مجھے صرف دھماکہ یاد ہے کیونکہ میں تھوڑی دیر پہلے شاپنگ سے واپس آئی تھی۔ اس نے بتایا کہ فوراً ہی اس کی ماں لیوبوف نے اسے آواز دی اور کانپتی ہوئی آواز میں کہا کہ اس کے والد روٹی خریدنے بازار گئے تھے اور ابھی تک باہر ہی ہیں۔

بیٹی کا کہنا تھا کہ میں نے والد کو فون کیا لیکن کوئی جواب نہیں ملا، بعد ازاں جب میں اپنا کوٹ اوڑھ کر باہر نکلی تو گھر سے چند منٹ کے فاصلے پر سڑک کے کنارے اپنے والد کی لاش دیکھ کر اپنا ہوش کھو بیٹھی۔

یہ تصویر اسی منظر کی ہے جب دھماکوں کی آواز سن کر ریسکیو ادارے کے اہلکار اور میڈیا فوٹو گرافر بھی اسی وقت ایمبولینسوں کے ساتھ وہاں پہنچے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں