The news is by your side.

Advertisement

مادرِ ملّت محترمہ فاطمہ جناح کی 54 ویں برسی آج منائی جارہی ہے

قیامِ پاکستان کی جدوجہد اور بانیِ پاکستان قائدِ اعظم محمد علی جناح کے شانہ بشانہ کام کرنے والی ان کی ہمشیر محترمہ فاطمہ جناح کی برسی آج نہایت عقیدت و احترام سے منائی جا رہی ہے۔

ان کا شمار جدوجہدِ آزادی کے صفِ اوّل کے قائدین اور ان خواتین راہ نماؤں میں کیا جاتا ہے جو آغاز سے لے کر قیامِ پاکستان تک جدوجہد کے دوران ہر موقع پر میدانِ عمل میں نظر آئیں اور بانیِ پاکستان قائدِاعظم محمد علی جناح کے ساتھ آگے بڑھتی رہیں۔ محترمہ فاطمہ جناح کا تحریکِ پاکستان اور وطنِ عزیز کے لیے کردار بے مثال اور ناقابلِ فراموش ہے۔

فاطمہ جناح نے قائدِاعظم کے شانہ بشانہ چلتے ہوئے برصغیر کی مسلمان خواتین کو ایک پلیٹ فارم پر جمع کر کے حصولِ پاکستان کی منزل کو آسان بنایا اور ان کی گراں قدر خدمات پر انھیں مادرِ ملت کا خطاب دیا گیا۔

سن 1964ء کو پاکستان اور جمہوریت کے لیے سیاسی میدان میں‌ جنرل ایوب خان کا مقابلہ کیا اور انتخابات میں حصہ لیا۔

وہ 73 برس کی عمر میں 9 جولائی 1967ء کو اس دارِ فانی سے رخصت ہو گئیں۔ مادرِ ملّت کی تدفین ان کے بھائی اور بابائے قوم محمد علی جناح کے مزار کے احاطے میں کی گئی جہاں‌ ہر سال ان کی برسی کے موقع پر خصوصی طور پر لوگ فاتحہ خوانی کے لیے جاتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں