The news is by your side.

Advertisement

صرف مونا لیزا ہی لیونارڈو ڈاونچی کی وجہِ شہرت نہیں!

مونا لیزا کا خالق لیونارڈو ڈاونچی مصوّر ہی نہیں ایک ذہین انسان بھی تھا جس نے پانچ صدی پہلے وہ کارنامے انجام دیے جن کی بنیاد پر کہا جاسکتا ہے کہ اس کے تخیل کی اڑان ہی نہیں‌ بلکہ اس کا شعور بھی بلند پرواز تھا۔

وہ ایک مصوّر، مؤرخ، مجسمہ ساز، انجنیئر، ریاضی دان اور موجد تھا۔ آج لیونارڈو ڈاونچی کا یومِ‌ وفات ہے۔ مونا لیزا کی پینٹنگ کو اس کا لافانی شاہ کار کہا جاتا ہے جس پُراسرار مسکراہٹ آج تک دنیا کے نام ور آرٹسٹوں میں زیرِ بحث آتی ہے اور اسے لیونارڈو ڈاونچی کے کمالِ فن کی عظیم مثال کہا جاتا ہے۔ اسے آئیڈل مین کے لقب سے نوازا گیا۔

لیونارڈو ڈاونچی نے اٹلی کے ایک قصبے میں 15 اپریل 1452ء کو آنکھ کھولی تھی جہاں اس کے والد کو ایک زمین دار کی حیثیت سے اہمیت دی جاتی تھی۔ لیونارڈو نے تعلیم کے ساتھ مطالعہ کا شغف اپنایا اور 15 برس کی عمر میں معروف مصور آندریا ڈیل ویروشیو کی شاگردی اختیار کرلی، جس کی ورکشاپ میں مصوری و مجسمہ سازی کے ساتھ ٹیکنیکل اور میکینکل کی تعلیم بھی حاصل کی۔ جلد ہی اس کا نام پہچان بنانے لگا۔ لیونارڈو 1482ء میں میلان گیا اور وہاں 17 برس گزار دیے۔ اس عرصے میں اس نے اپنے فنِ مصوّری اور علم کے سبب بڑا رتبہ اور ڈیوک کے مصور اور انجینئر کا خطاب پایا۔ میلان میں فنِ‌ مصوری اور مجسمہ سازی کے علاوہ تعمیر سازی، قلعہ بندی اور فوجی امور میں وہ تکنیکی مشیر بھی رہا۔ اس کے ساتھ ہائیڈرولک اور میکینکل انجینئر کی حیثیت سے بھی کام کیا۔

لیونارڈو کو سیاسی حالات اور کام کے سبب بھی فرانس، اٹلی اور مختلف علاقوں میں رہنا پڑا اور اس دوران وہ مصوری سے لے کر اپنی دل چسپی اور شوق کے ہر کام کو اپنے تخیل اور ذہنِ رسا کی مدد سے ماہرانہ انداز میں انجام دیتا رہا اور 65 سال کی عمر میں لیونارڈو فرانس کے نوجوان بادشاہ فرانسس اوّل کے قریب ہو گیا۔ فرانس میں قیام کے دوران اس نے زیادہ توجہ سائنسی تحقیق پر دی۔ اس زمانے میں‌ اڑنے والی گاڑی (ہیلی کاپٹر)، روبوٹ، پیرا شوٹ، فریج جیسی ایجادات کا تصور اور ان کے ابتدائی خاکے مع ضروری تفصیل اور ریڑھا بنانے کے حوالے سے لیونارڈو ڈاونچی ہی کا نام لیا جاتا ہے۔

2 مئی 1519ء کو فرانس ہی میں لیونارڈو ڈاونچی نے اپنی زندگی کا سفر تمام کیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں