The news is by your side.

Advertisement

اردو زبان کے نام وَر ادیب محمد خالد اختر کا یومِ وفات

2 فروری 2002ء اردو کے نام وَر ادیب محمد خالد اختر کا یومِ وفات ہے۔ ناول، افسانہ، سفر نامے کے علاوہ انھوں نے مزاح نگاری میں نام و مقام بنایا۔ محمد خالد اختر کو ان کے ناول ‘چاکیواڑہ میں وصال’ سے بہت شہرت ملی۔

23 جنوری 1920ء کو الہ آباد تحصیل لیاقت پور، ضلع بہاولپور میں پیدا ہونے والے محمد خالد اختر نے اوائلِ عمری ہی سے لکھنے کا آغاز کر دیا تھا۔ ان کے چند مضامین پہلی مرتبہ ایک ماہنامہ میں شایع ہوئے تھے جس سے ان کی حوصلہ افزائی ہوئی اور یوں انھوں نے باقاعدہ ادبی سفر کا آغاز کیا۔

ان کی تصانیف میں ان کا ناول چاکیواڑہ میں وصال سرِفہرست ہے جسے اس کے اسلوب کے باعث نام ور شاعر فیض احمد فیض نے اردو کا اہم ترین ناول قرار دیا تھا۔

محمد خالد اختر کی تصانیف میں کھویا ہوا افق، مکاتبِ خضر، چچا عبدالباقی، لالٹین اور دوسری کہانیاں سمیت سفر نامے، مضامین اور ترجمے شامل ہیں۔ 2001ء میں انہیں دوحہ قطر میں عالمی اردو ایوارڈ سے نوازا گیا تھا۔

وہ کراچی کے پی ای سی ایچ سوسائٹی کے قبرستان میں آسودۂ خاک ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں