The news is by your side.

Advertisement

ناردرن کو شکست؛ خبر پختونخواہ فائنل میں

دفاعی چیمپئن خیبر پختونخواہ نے ناردرن کو پہلے سیمی فائنل میں شکست دے کر نیشنل ٹی ٹونٹی کے فائنل ‏میں رسائی حاصل کرلی.‏

‏ کے پی نے 157 رنز کا ہدف 5 گیندیں قبل 5 وکٹوں کے نقصان پر حاصل کرلیا. ‏

افتخار احمد کی 17 گیندوں پر 260 سے زائد کے اسٹرائیک ریٹ سے 45 رنز کی اننگز نے کے پی کی جیت میں اہم ‏کردار ادا کیا. ‏

ان فارم بیٹر صاحبزادہ فرحان نے 53 رنز کی اننگز کھیلی. ‏

مطلوبہ ہدف کے تعاقب میں خیبر پختونوخواہ کے ان فارم بیٹر صاحبزادہ فرحان نے 39 گیندوں پر 135.9 کے ‏اسٹرائیک ریٹ سے 53 رنز اسکور کرکے اپنی ٹیم کو مضبوط آغاز فراہم کیا. ‏

صاحبزادہ فرحان کی اننگز کی میں 7 چوکے اور ایک چھکا شامل تھا. ‏

ان کے پویلین واپس لوٹنے پر کامران غلام نے دفاعی چیمپئن کی کمان سنبھالی اور 120 کے اسٹرائیک ریٹ سے 35 ‏رنز بنائے مگر افتخار احمد کی 45 رنز کی دھواں دھار اننگز نے میچ کا پانسہ پلٹ دیا. انہوں نے 4 چوکے اور 3 ‏چھکے لگا کر کے پی کو فائنل میں پہنچا دیا. ‏

‏ مڈل آرڈر بیٹر افتخار احمد نے جارحانہ بیٹنگ کرکے خیبر پختونوخواہ کو جیت سے ہمکنار کردیا. افتخار احمد نے ‏زمان خان کو ایک اوور میں دو چھکے جڑ کر کے پی کو فتح کے قریب پہنچایا. اس موقع پر کے پی کو جیت کے ‏لیے 18 گیندوں پر 40 رنز درکار تھے. ‏

انہوں نے 17 گیندوں پر 4 چوکے اور 3 چھکے داغ کر 45 رنز کی ناقابل شکست اننگز کھیلی. ‏

اس سے قبل ناردرن نے خیبر پختونوخواہ کی دعوت پر پہلے بیٹنگ کا آغاز کیا تو ناردرن کے ابتدائی چاروں بیٹرز نے ‏قدرے محتاط کھیل پیش کیا، جس کی وجہ سے انہیں اسکور بورڈ پر بڑا مجموعہ سجانے میں کامیابی نہ مل سکی. ‏

ناصر نواز اور علی عمران نے ناردرن کو 48 رنز کا آغاز فراہم کیا. ناصر نواز نے 5 چوکوں کی مدد سے 27 جبکہ علی ‏عمران نے 4 چوکوں کی بدولت 24 رنز کی اننگز کھیلی.‏

اس کے بعد ذیشان ملک نے عمر امین کے ہمراہ رنز بنانے کا سلسلہ جاری رکھا تاہم وہ بھی رنز کی رفتار کو تیز نہ ‏کرسکے. ذیشان ملک نے 3 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 29 جبکہ عمر امین 22 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے. ان کی ‏اننگز میں 2 چھکے شامل تھے. ‏

ناردرن نے مقررہ 20 اوورز میں 8 وکٹوں کے نقصان پر 156 رنز بنائے. سہیل تنویر اور عامر جمال نے 19،19 اور ‏روحیل نذیر نے 11 رنز اسکور کیے. ‏

ارشد اقبال نے 3 جبکہ افتخار احمد، خالد عثمان اور محمد عمران نے ایک ایک وکٹ حاصل کی.‏

Comments

یہ بھی پڑھیں