The news is by your side.

Advertisement

پسند کی شادی سے انکار، نوجوان کا لڑکی سمیت خودکش دھماکا

دمشق : شام نوجوان نے پسند کی لڑکی سے شادی کی اجازت نہ ملنے پر لڑکی سمیت خود کو بم سے اڑا لیا۔

عرب خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق نوجوانوں کی خودکشی کا یہ افسوس ناک واقعہ اردن کی سرحد سے متصل شامی علاقے السویداء میں حفر اللحف کے مام پر پیش آیا۔

حافظ نزار ابو فخر نے 22 سالہ لڑکی کے ساتھ شادی کے لیے اس کے اہلخانہ کو پیغام بھیجا تھا مگر لڑکی کے والدین نے انکار کرتے ہوئے کسی اور جگہ شادی کرنے کی خواہش ظاہر کی جبکہ دوشیزہ بھی ابو فخر سے شادی کرنا چاہتی تھی۔

بائیس سالہ لڑکی حنان عبداللہ یونیورسٹی سے گھر لوٹ رہی تھی کہ راستے میں نزار ابو فخر نے اسے ملاقات کی، اس موقع پر اس نے اپنے پاس موجود بم کا دھماکا کیا جس کے نتیجے میں دونوں موقع پر ہی ہلاک ہو گئے۔

عرب خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ مذکورہ علاقے میں اس نوعیت کی خودکشی کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔

مقامی میڈیا کا کہنا تھا کہ ایک سال قبل السویداء گورنری میں رامی خذیفہ نامی ایک نوجوان نے الکفر کے مقام پر ولید صادق نامی شخص کے گھر میں خود کو دھماکے سے اڑا دیا تھا۔

خودکش بمبار 19 سالہ خذیفہ ایک 17 سالہ لڑکی کے ساتھ رشتہ ازدواج میں منسلک ہونا چاہتا تھا مگر لڑکی کے والدین نے اس اس کے ساتھ بیٹی کی شادی سے انکار کیا جس پر اس نے لڑکی کے گھر میں جا کرخود کو دھماکے سے اڑا دیا تھا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں