site
stats
عالمی خبریں

جلماروسیف کا برازیل کے صدر پررشوت لینے کاالزام

برا زیلیا: برازیل کی سابق صدر جلما روسیف کی جانب سے صدر مائیکل ٹیمر پر تعیمراتی کمپنی سے رشوت لینے کا الزام عائد کیا گیاہے۔

تفصیلات کےمطابق برازیل کی سابق صدر جلما روسیف کے وکلا کی جانب سےجمعرات کےروز عدالت میں جمع کروائے جانے والے دستاویزات کےمطابق مائیکل ٹیمر کو تعیمراتی کمپنی کی جانب سے 2لاکھ، 95 ہزار ڈالرز کی ادائیگی کی گئی تھی۔

سابق صدر کے وکلا کی جانب سے جمع کروائے جانے والےدستاویزات کے مطابق تعمیراتی کمپنی کے سابق سی ای اواوٹاویو ازیویڈو نے یہ رقم برازیلین ڈیموکریٹک موومنٹ پارٹی کے فنڈ میں براہ راست منتقل کی تھی۔

یاد رہے کہ اس سے قبل اوٹاویو ازیویڈو نے پلی بارگین کے تحت گواہی دی تھی کہ جیلما روسیف کو رشوت دی گئی تھی۔عدالت میں جمع کیے گئے دستاویزات کےمطابق منتقل کی جانے والی رقم مبینہ طور پر مائیکل ٹیمر کی ذاتی مہم فنڈ کو دیا گیا۔

جیلما روسیف کے وکلا کا کہنا ہے کہ اوٹاویو ازیویڈو نے جھوٹ بولا تھا اور رشوت کی رقم مائیکل ٹیمر کو دی گئی لہذا ان کا مواخذہ ہونا چاہیے۔

دوسری جانب برازیل کے صدر مائیکل ٹیمر کا کہناہے کہ جلما روسیف پارٹی کی سربراہ تھیں اور وہ ہی ان سب کی ذمہ دار ہیں۔انہوں نے کہا کہ پارٹی کو ملنے والا چندہ قانونی ہے اور اسے الیکٹورل کورٹ کے سامنے ظاہر کیا گیا تھا۔

مزید پڑھیں:برازیل کی سابق صدرعہدے سے برطرف

واضح رہے کہ رواں سال ستمبرمیں برازیل کی سابق صدر جلما روسیف کو سینیٹ نےان کے عہدے سے برطرف کر دیا تھاان پر ملک کے بجٹ کے اعداد وشمار میں ہیرا پھیری کا الزام تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top